وسطی کشمیر سخت سکیورٹی حصارمیں،تلاشی مہم تیز

وسطی کشمیر سخت سکیورٹی حصارمیں،تلاشی مہم تیز

  



سرینگر (کے پی آئی)سرینگر پارلیمانی حلقے میں نام نہاد بھارتی انتخابات کے پیش نظر سرینگر، گاندربل اور بڈگام اضلاع میں چپے چپے پر پولیس اور نیم فوجی دستوں کی بھاری تعیناتی عمل میں لاکر تلاشی کارروائیوں اور گاڑیوں و راہگیروں کا چیکنگ کاسلسلہ تیز کردیاگیا ہے ۔آج بدھ کو ہو نے والے انتخابات میں عسکریت پسندوںکی طرف سے امکانی گڑ بڑ کے پیش نظر پورے شہر کوسیکورٹی کے سخت حصار میں رکھا گیا ہے اور سرینگر اور دیگر حساس قصبہ جات میں نصب کلوز سرکٹ کیمروں کے ذریعے ہر لمحہ نظر گذر کو مزید فعال بنایاگیا ہے۔ پہلے ہی جاری ہائی الرٹ کے تحت پولیس اور سیکورٹی ایجنسیوں کو چوکنا رہنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ اور اس مقصد کیلئے گذشتہ روز سخت حفاظتی انتظاما ت کے تحت سرینگر اور اس کے گرد نواح میں پولیس اور نیم فوجی دستوں نے گاڑیوں کی چیکنگ اور راہ گیروں کی پوچھ تاچھ کا سلسلہ جاری رکھا۔

 جس کے دوران لوگوںکے شناختی کارڈ چیک کئے گئے۔ بٹہ مالو ، جہانگیر چوک ، بمنہ ، رام باغ ، نشاط ، مگھر مل باغ ، خانیار ، قمرواری ، پارم پورہ اور سیمنٹ کدل میں وقفے وقفے سے سکوٹر و موٹر سائیکل سواروں ، آٹو رکھشا ، نجی گاڑیوں و مسافر گاڑیوں میں سوار لوگوں کے شناختی کارڈ چیک کئے گئے بلکہ ان سے پوچھ تاچھ بھی کی گئی ۔ اس موقع پر اسکوٹر وں اورگاڑیوں کی رجسٹریشن سے متعلق دستاویزات کی جانچ پڑتال کا عمل بھی تیز کردیا گیا ۔اس کے علاوہ شہر کے مختلف علاقوں میں خصوصی ناکے بٹھائے گئے جہاں گاڑیوں اور مسافروں کی چیکنگ کی جارہی تھی۔ادھر گاندربل اور بڈگام سے بھی اسی طرح کی اطلات ہیں ۔

مزید : عالمی منظر


loading...