زکوٰة کی ادائیگی انسان کی زندگی میں تبدیلی لا سکتی ہے،ڈاکٹر مرتضیٰ مغل

زکوٰة کی ادائیگی انسان کی زندگی میں تبدیلی لا سکتی ہے،ڈاکٹر مرتضیٰ مغل

  



 لاہور(پ ر)پاکستان اکانومی واچ کے صدر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے اسلام نے پندرہ سو سال قبل کاروباری اداروں کی سماجی ذمہ داری کا بہترین تصور پیش کیا جبکہ مغرب نے حال ہی میں کارپوریٹ اداروں کی سماجی ذمہ داری کا سلسلہ شروع کیا ہے جو ناقص ہے اسلام نے انفرادی اور اجتماعی اقتصادی زندگی کیلئے مخصوص قوانین روشناس کروائے اور پندرہ سو سال قبل صدقہ، خیرات، زکواة، فطرہ اور قربانی کا گوشت بانٹنے کی ہدایت کی جو سماجی ذمہ داری کی روشن مثال ہے ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے یہ بات قائد اعظم یونیورسٹی کے سکول آف منیجمنٹ سائنسز میں کارپوریٹ اداروں کی سماجی ذمہ داری اور اسلامی تعلیمات کے موضوع پر منعقدہ ایک سیمینار سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہی اس موقع پر ادارے کے سربراہ ڈاکٹر اجمل وحید ،سیمینار کوآرڈینیٹر برکت اللہ ،سپروائیزروسیم عباس شاہیں اوربڑی تعداد میں طلباءو طالبات بھی موجود تھے ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا کہ قرآن میں تین سو سے زیادہ بار زکواة کی تاکید کی گئی ہے جو عوام کی زندگی میں تبدیلی لا سکتی ہے اسلام محض منافع کیلئے کاروبار کو پسند نہیں کرتاجبکہ مغرب نےسماجی ذمہ داری کا شوشا اپنے منافع اور امیج بہتر بنانے اور سوسائٹی کی ہمدردی سمیٹنے کے لئے اپناپاکستا ن کا کاروباری برادری سماجی ذمہ داری نبھا رہی ہے مگر انکی سمت درست کرنے کی ضرورت ہے تاکہ معاشرہ پر مثبت اثر پڑ سکے معیشت اور سماجی خدمات کے شعبوں میں حکومت کے سمٹتے رول کے سبب نجی شعبہ کی ذمہ داریاں بڑھ گئی ہیں اور انھیں اس سمت میں مزید کوششیں کرنے کی ضرورت ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1