کھیرا اور خربوزہ کھاتے وقت پانی پینا خطرناک ہو سکتا ہے،ماہرین صحت

کھیرا اور خربوزہ کھاتے وقت پانی پینا خطرناک ہو سکتا ہے،ماہرین صحت

  



لاہور(پ ر)بدلتے موسم کے لحاظ سے آنے والے سخت گرم موسم کا مقابلہ کرنے کے لیے ہمیں ابتدا ءمیں ہی مناسب احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہیے موسم گرماکے بُرے اثرات سے بچنے اور پیاس بجھانے کے لیے روایتی مشروبات مثلا لیموں کی سکنجبین، دودھ کی لسی، ستو ، لسی ، شربت صندل ، بزوری اور سردائی وغیرہ استعمال کرنا مفید ہے یہ نا صرف پیاس بجھاتے ہیں بلکہ جسم انسانی میں نمکیات کے توازن کو بھی قائم رکھتے ہیں موسم گرما میں گرم اور مرغن غذاو¿ں کے استعمال کو جاری رکھنا بھی صحت کیلئے مفید نہیںان خیالات کا اظہاربدلتے موسم کی احتیاطی تدابیر کے موضوع پر منعقدہ مذاکرہ سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر حکیم محمداعجاز فاروقی ،حکیم محمد جاوید رسول ، حکیم محمد احمدسلیمی ، حکیم محمد افضل میو ، حکیم احمد حسن نوری، حکیم حامد محمود، حکیم عطاالرحمن صدیقی، حکیم ڈاکٹر عمر فاروق گوندل اور حکیم محمد اسماعیل نے گفتگو کرتے ہوئے کیا پروفیسر حکیم محمد اعجاز فاروقی نے اپنی گفتگو میں کہا کہ موسم گرما کے مسائل سے بچنے کے لیے روایتی مشروبات کے ساتھ ساتھ تازہ اور قدرتی غذاﺅں کو استعمال کرنا چاہیے کھیرا ، خربوزہ اور تربوز وغیرہ کھانے میں احتیاط سے کام لیں اور ان پھلوں کے کھانے کے دوران پانی نہ پیا جائےحکیم محمد احمد سلیمی نے موسم گرما کے بد اثرات اور صحت کے تقاضے کے موضوع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ موسم کے بد اثرات میں لو لگنا ، پسینے کی کثرت ، ہیضہ ، اسہال ، بخار ،تھکاوٹ اور کمزوری وغیرہ شامل ہیں

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...