جیو کے ملازم نے مہران بیس پر حملے میں اہم کردار ادا کیا: نیو یارک ٹائمز

جیو کے ملازم نے مہران بیس پر حملے میں اہم کردار ادا کیا: نیو یارک ٹائمز
جیو کے ملازم نے مہران بیس پر حملے میں اہم کردار ادا کیا: نیو یارک ٹائمز

  



نیویارک(بیورورپورٹ) نیویارک ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں جیو کے ایک سابق منیجر کے حوالے سے چونکادینے والے انکشافات کئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق 2012ء میں کالعدم تنظیم نے اپنے ایک کارکن کو جونیئر رپورٹر کے طور پر جیو میں بھرتی کرایا۔ اخبار کے مطابق رپورٹر کے لبادے میں چھپے میں کالعدم تنظیم کے کارکن کا مقصد ایک نیوز ایڈیٹر اور ٹاک شو کے میزبان کو قتل کرنا تھا لیکن یہ رپورٹر پکڑے جانے کے باعث اپنے منصوبے کو عملی جامہ نا پہنا سکا۔نیویارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق 2011ء میں کراچی میں مہران بیس پر  حملے میں بھی جیو کا ایک ملازم ملوث تھا۔ حملے کے بعد جیو کے اس ملازم کی شدت پسند کے طور پر شناخت کی گئی۔ جیو کے سابق منیجر کے حوالے سے اخبار نے لکھا ہے کہ جیو کے مقتول رپورٹر ولی خان بابرکی شہادت میں بھی جیو کے ایک ملازم کا ہاتھ تھا۔ جیو کے ملازم نے ولی خان بابر کے قاتلوں کو اس کے عزائم سے آگاہ کیا۔اور انہوں نے گھر جاتے ولی خان بابر کو شہید کر دیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...