خواجہ آصف سے وزارت کا قلمدان واپس نہیں لینا چاہیئے ،خورشید شاہ

خواجہ آصف سے وزارت کا قلمدان واپس نہیں لینا چاہیئے ،خورشید شاہ

  



              اسلام آباد(خصوصی رپورٹ)قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہاہے کہ موجودہ حالات میں ماتحت ادارے کے دباو¿ پروزیردفاع کوہٹاناانتہائی خطرناک ہوگا، کل کوئی وزیراعظم کوبھی ہٹاسکتاہے۔ ان کاکہنا ہے کہ ماضی میں ریلیاں نکلوانے والے خورشید شاہ نے کہا کہ وہ حکومت کوتجویزکرتے ہیں کہ ایک نئے وزیرکوکابینہ میں شامل کرکے وزارت دفاع اس کے حوالے کردی جائے کیونکہ اس وقت وزیردفاع کے پاس دوچارج ہیں۔ قائدحزب اختلاف نے کہاکہ جو حامدمیر کے ساتھ ہوا افسوس ناک ہے، کچھ لوگ فوج کے حق میں ریلیاں نکال رہے ہیں، ایسا نہیں ہونا چاہے، انہیں روکا جائے۔ اداروں کا ٹکراو حکومت کے حق میں نہیں جائے گا، حکومت اپنا کردار ادا کرے۔انہوں نے کہاکہ ماضی میں ریلیاں نکلوانے والے پھر سے متحرک ہو گئے ہیں، انہوں نے پیپلزپارٹی کیساتھ رابطہ نہیں کیاکیونکہ وہ جانتے تھے کہ ہم جمہوریت کی بساط لپیٹنے میں ان کا ساتھ نہیں دیں گے۔ اس وقت تین بڑی جماعتیں نظرآرہی ہیں ، ایک پرتوگیم ہوسکتی ہے وہ اس سے ریلی نکلوارہے ہیں اوروہ سیاسی تجربہ نہیں رکھتی ، اس وقت ریلی نکالنے کی ضرورت نہیں۔ وہ سیاسی جماعتوں سے کہتے ہیں کہ انہیں بھی حکومت ملے لگی ، جمہوریت کوسبوتاڑ نہ کریں۔طاہر القادری کینیڈامیں بیٹھ کرپاکستان میں سیاست نہ کریں بلکہ دین کی تبلیغ کے لیے ریلیاں نکالیں۔ خورشید شاہ نے کہا حکومت خارجہ پالیسی اور طالبان مذاکرات پر اپوزیشن جماعتوں سے مشاورت کرے وہ اچھا مشورہ دیں گی۔ انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی فرینڈلی نہیں پختہ سیاست کررہی ہے۔

مزید : صفحہ اول