تھانیدار کا کمسن بچوں کے اغوا اور بداخلاقی میں ملوث ملزم کیخلاف مقدمہ درج کرنے سے انکار

تھانیدار کا کمسن بچوں کے اغوا اور بداخلاقی میں ملوث ملزم کیخلاف مقدمہ درج ...

  



               لاہور(کرائم سیل)ڈی پی او چنیوٹ راﺅ منیر ضیاءکے سابق سٹاف آفیسر لیاقت ملک کے ظلم سے متاثرہ خاندان نے انصاف کے حصول کے لئے پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاج کیا اور پولیس کے خلاف نعرہ بازی کی، نیاز، اسکی اہلیہ تاج بی بی اور بداخلاقی کی شکار بیٹی صائمہ نے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پرایس ایس پی راﺅ منیر ضیائاور لیاقت ملک کے خلاف نعرے درج تھے جبکہ وزیر اعلی پنجاب ، چیف جسٹس پاکستان اور آئی جی پنجاب سے انصاف کا مطالبہ کیا گیا ۔ تحریک انصاف لاہور کی نائب صدر ڈاکٹر سیمی اور دیگر رہنماﺅں نے بھی متاثرہ خاندان کی بات سن کر انکی قانونی مدد کرنے کا اعلان کیا اور انصاف فراہم کرانے کی یقین دہانی کرائی۔ پولیس حکام نے جلدانصاف فراہم کرانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے متاثرہ خاندان کو آج سی سی پی او کے دفتر طلب کرلیا۔ نیاز احمد نے احتجاج کے دوران صحافیوں کو بتایا کہ اسکی بیٹی صائمہ جوہر ٹاﺅن مےںسابق تھانیدارلیاقت ملک کے دوست کے گھر ملازمہ تھی جہاں سے ایس ایس پی راﺅ منیر ضیا ءکے سابق سٹاف آفیسر نے اغواکے بعد بداخلاقی کانشانہ بناےا جبکہ اسکے خاندان کے افراد کو پولیس کے ہمراہ گھر سے اغوا کر کے سبزہ زار اپنے کوٹھی کے تہہ خانے میں لے گیا جہاںتمام خاندان کو برہنہ کرکے تشدد کا نشانہ بنایا ۔بعد ازاں تھانیدار اسکی بیٹی کو جوہر ٹاﺅن لیجا کر اس سے بداخلاقی کرتا رہا ۔نیاز نے صحافیوں کو بتایا کہ تھانیدار کی سفارش ایس ایس پی راﺅ منیر ضیا کرتا ہے جس پر اسے انصاف تو نہ ملا لیکن لاہور اور قصور میں وہ 4جھوٹے مقدمات میں جیل رہ کررہا ہو کر آیا تب سی سی پی او نے اس واقعہ کی تحقیقات کے بعد اسکا مقدمہ جوہر ٹاﺅن میں درج کرایا ،لیکن ایس ایس پی کی سفارش کے باعث انہیں انصاف نہ مل سکا اور تفتیشی ایاز بیگ نے بااثر تھانیدار لیاقت ملک سے سازباز کرکے مقدمہ خارج کر دیا ۔

 

مزید : علاقائی


loading...