جو جرنیل بھی آئین توڑے گا اس پر تنقید ہو گی ‘ سعد رفیق

جو جرنیل بھی آئین توڑے گا اس پر تنقید ہو گی ‘ سعد رفیق

  



لاہور (آئی این پی )وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ آزادی اظہار رائے اوراختلاف رکھنے والا نہیں آئین توڑنے والا غدار ہوتا ہے ‘جو جرنیل بھی آئین توڑے گا اس پر تنقید ہو گی ‘پی سی او کے تحت حلف اٹھانے والے جج اور لوٹ مار کرنے والے سیاستدان کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا جائے گا ‘عدلیہ اور فوج کے پیشہ وارانہ کردار پر تنقید نہیں ہونی چاہیے ‘ملک میں جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں ‘عوام نے عام انتخابات میں تحریک انصاف کو مسترد کرکے عمرا ن خان کا وزیراعظم بننے کا خواب چکنا چور کر دیا ہے ‘عمران خان ہر وقت دھاندلی کا شور مچاتے ہیں اوران کو دھاندلی پر بات کرنے کے سوا کوئی کام نہیں آتا ‘ وہ انوکھے سیاستدان ہیں جو مجھ پر بھی دھاندلی کاالزام لگاتے ہیں ‘ ریلوے سے کرپشن ختم کرکے اسے پاﺅں پر کھڑا کرنا ہمارا ایجنڈا ہے ملک کو دہشت گردی سمیت تمام مسائل سے نجات دلا کر ترقی و خوشحالی کی راہ پر گامزن کریںگے ۔

حکومت اور فوج سمیت کسی ادارے میں کوئی تناﺅ نہیں تمام ریاستی اداروں کا آئینی کردار بالکل واضح ہے ۔ وہ منگل کے روز ریلوے پولیس ٹریننگ سکول میں پاسنگ آﺅٹ تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہاکہ ملک میں جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں اور موجودہ حکومت ملک میں جمہوریت کے ساتھ ساتھ تمام اداروں کومضبوط کرنے کےلئے اقدامات کر رہی ہے اور جمہوریت کی مضبوطی ہی ملک کی مضبوطی ہے ۔انہوںنے کہاکہ تحریک انصاف 11مئی سے احتجاجی تحریک چلانا چاہتی ہے تو اپنا شوق پورا کرلے عمران خان کو صرف پنجاب میں دھاندلی نظر آتی ہے تحریک انصاف نے خیبر پختونخواہ میں کامیابی حاصل کی لیکن ہم نے ان پر دھاندلی کا الزام نہیں لگایااور عمران خان کو بھی چاہیے کہ وہ دھاندلی دھاندلی کی باتیں بند کر دیں ۔انہوںنے کہاکہ پاکستان میں ہر کسی کو آزادی اظہار رائے کا پورا حق ہے اور اگر کوئی اس کا استعمال کرتا ہے تو اسکا ہرگز مطلب نہیں کہ وہ غدار ہے پاکستان سے غداری وہ ہی کرتا ہے جو آئین توڑتا ہے ‘بیرونی طاقتوں سے پیسے لے کر اپنے ملک کے خلاف کام کرتا ہے اور قومی راز بیچتا ہے ۔

 سعد رفیق

مزید : علاقائی


loading...