حامد میر حملہ کیس: تفتیشی ٹیم کی ہسپتال آمد، آئی ایس آئی کے نمائندے کی موجودگی میں بیان ریکارڈ نہیں کراﺅں گا: سینئر صحافی

حامد میر حملہ کیس: تفتیشی ٹیم کی ہسپتال آمد، آئی ایس آئی کے نمائندے کی ...
حامد میر حملہ کیس: تفتیشی ٹیم کی ہسپتال آمد، آئی ایس آئی کے نمائندے کی موجودگی میں بیان ریکارڈ نہیں کراﺅں گا: سینئر صحافی

  



کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک )جے آئی ٹی کی 8 رکنی ٹیم نے حامد میر کا بیان ریکارڈ کرنے کیلئے نجی ہسپتال میںحامد میرسے ملاقات کی، حامد میرنے بیان ریکارڈ کرانے سے انکار کردیا اور کہا کہ انکوائری ٹیم میں آئی ایس آئی کے نمائندے کی موجودگی کے باعث بیان ریکارڈ نہیں کرا سکتا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق آئی بی ،ایم آئی،آئی ایس آئی ، سی آئی ڈی، ایف آئی اے اور پولیس کے نمائندوں پر مشتمل جے آئی جی ٹیم حامد میر کا بیان لینے کیلئے ہسپتال پہنچی جہاں حامد میر نے تمام لوگوں کی آمد پر ان کا شکریہ ادا کیا۔حامد میر کا کہنا تھا کہ دنیا بھر میں واقعے کا فریق خود کو انکوائری سے الگ رکھتا ہے جبکہ جوائنٹ انوسٹٹیگیشن ٹیم (جے آئی ٹی )کی ٹیم میں فریق کا نمائندہ بھی موجود ہے اس لئے حملے سے متعلق بیان ریکارڈ نہیں کروا سکتا۔ حامد میر نے جے آئی ٹی ٹیم سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کے سفرکی معلومات آئی ایس آئی کے پاس تھیں اور ان معلومات سے متعلق ایک ڈی آئی جی اور ایک کمشنر کو عینی شاہد بنارکھا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی میں شامل تمام نمائندوں کا احترام اور عزت کرتاہوں ،جے آئی ٹی میں ایم آئی کی شمولیت پر اعتراض نہیں لیکن آئی ایس آئی کے نمائندے کی موجودگی میں بیان ریکارڈ نہیں کرا سکتا۔ حامد میر نے آئی ایس آئی کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہو ئے کہا کہ آپ کا احترام کرتا ہوں،میری لڑائی آپ سے نہیں ہے،آپ کے ادارے میں موجود ماسٹر مائنڈ اور چند شخصیات سے متعلق میرے تحفظات ہیں،میرا شک آپ کے ادارے پر ہے، ماسٹرمائنڈ آپ کے ادارے میں شامل لوگ ہیں،آپکی موجودگی میں مجھے انصاف کی توقع نہیں، آپ کی موجودگی میں بیان نہیں دوں گا۔آئی ایس آئی نمایندے پر تحفظات کے بعد جے آئی ٹی کے سربراہ نے 5 منٹ کا وقفہ طلب کیا جس کے بعد جے آئی ٹی کے نمائندے واپس نہیں آئے۔

مزید : کراچی /اہم خبریں


loading...