نائیجیریا: اغوا شدہ لڑکیوں کی قیمت 1200روپے

نائیجیریا: اغوا شدہ لڑکیوں کی قیمت 1200روپے
نائیجیریا: اغوا شدہ لڑکیوں کی قیمت 1200روپے

  



ابوجا (نیوزڈیسک) مذہب، آزادی اور جہاد کا راگ الاپنے والے بعض اوقات اصل میں بھیانک جرائم میں ملوث ہوتے ہیں، نائیجیریا میں سکول کی بچیوں کو اغوا کرنے والے گروہ ’’بوکو حرام‘‘ کے باغی بھی ایسے ہی سیاہ کردار کے حامل ہیں۔ پچھلے ماہ اغواء کی گئی سکول کی بچیوں کی بدقسمتی نے اب ایک نیا موڑ لے لیا ہے۔ حال ہی میں انکشاف ہوا ہے کہ باغی گروہ کے دہشت گردوں نے ان بچیوں سے ’’شادیاں‘‘ کرلی ہیں اور اب انہیں نائیجیریا سے باہر کیمرون اور چاڈمیں منتقل کردیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سکول کے ہاسٹل سے جن دہشتگردوں نے ان بچیوں کو اغواء کیا وہ ان کے مالک بن بیٹھے اور پھر دیگر دہشت گردوں نے اغواء کاروں کو محض 12 ڈالر فی بچی ادا کرکے ان معصوم بچیوں کو اپنی ہوس مٹانے کیلئے خریدلیا اور اس شرمناک عمل کو شادیوں کا نام دے دیا۔ 234 کے قریب اغواء ہونے والی بچیوں کے والدین مسلسل آہ وزاری کررہے ہیں لیکن ملک کی فوج لوگوں کی طرف سے متعدد اطلاعات فراہم ہونے کے باوجود ان بچیوں کو بدکردار دہشت گردوں کے چنگل سے بازیاب کروانے میں ناکام رہی ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...