پولیس مقابلے میں مارے جانیوالے مبینہ ڈاکو کا پوسٹ مارٹم نہ ہو سکا

پولیس مقابلے میں مارے جانیوالے مبینہ ڈاکو کا پوسٹ مارٹم نہ ہو سکا

  

لاہور(کر ائم رپو رٹر)کینٹ کے علاقے میں سی آئی اے پولیس کے ہاتھوں مبینہ پولیس مقابلے میں پار کئے جانیوالے ملزم کا پورسٹمارٹم کیلئے ورثہ سے رابطہ نہیں ہو سکا ہے۔ ذرائع کے مطابق ہتھکڑیوں میں جکڑے ملزم کو جعلی پولیس مقابلے میں پار کر دیاگیا۔ ملزم دو روز قبل سی آئی اے پولیس کی حراست میں اہلکار سے پستول چھین کر 4افراد کو فائرنگ کر کے زخمی کر کے فرار ہو گیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق سی آئی اے سول لائن ڈویعن پولیس نے قتل کی تفتیش کے سلسلے میں آصف نامی ملزم کو کئی روز سے حراست میں لے رکھا تھا۔ 3 روز قبل ملزم آصف نے سب انسپکٹر مشتاق احمد کے پستول سے فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں 2 پولیس اہلکاروں سمیت 4افراد زخمی ہو گئے اس دوران تھانہ غازی آباد کے اہلکاروں نے ملزم کو قابو کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا اور اعلی افسران کو اطلاع دی کہ ملزم فرار ہو گیا ہے۔ گزشتہ روز اطلاع ملی کہ وہ پولیس مقابلے میں مارا گیا ہے۔ ملزم دہشت کی علامت سمجھا جاتا تھا اور پولیس کو مقدمات میں مطلوب تھا،ملز م نے پروفیسر ذوالفقار شاہ کو ہلاک کیا کوثر خان نامی شخص کو اغوا کرکے قتل کرکے لاش نہر میں پھینک دی تھی۔

مزید :

علاقائی -