قادیانیوں کو قومی کمیشن برائے اقلیت میں شامل کرنا زیادتی ہے،علماء

قادیانیوں کو قومی کمیشن برائے اقلیت میں شامل کرنا زیادتی ہے،علماء

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات مو لانا عزیز الرحمن ثانی، مبلغ ختم نبوت لاہور مولانا عبدالنعیم، ختم نبوت رابطہ کمیٹی کے ممبران قاری جمیل الرحمن اختر، مولانا علیم الدین شاکر، پیررضو ان نفیس، مولانا حافظ محمداشرف گجر، مولانا خالدمحمودویگر علماء نے قادیانیوں کو نیشنل کمیشن برائے اقلیت میں شامل کرنے پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعظم کی ہدایت پر حکومت پاکستان کا قادیانیوں کو قومی کمیشن برائے اقلیت میں شامل کرنے کا فیصلہ یہ بدترین قادیانیت نوازی ہے۔ قادیانی کوئی مذہب نہیں بلکہ فتنہ ہے اور فتنہ ہمیشہ انتشار پھیلاتا ہے قادیانیوں کی جو حیثیت آ ئین نے متعین کی ہوئی ہے قادیانی اسکو تسلیم نہ کرکے آئین پاکستان سے کھلم کھلا غداری کا ارتکاب کررہے ہیں۔

 جب تک قادیانی آئین میں متعین اپنی حیثیت کو تسلیم نہیں کرتے اس وقت انکو کسی بھی کمیشن میں شامل کرنا یہ آئین شکن گروہ کی حوصلہ افزائی کرنے مترادف ہوگا۔ قادیانی ایک طویل عرصہ سے کوشش کررہے تھے کہ کسی نہ کسی طرح انہیں حکومتی کمیٹیوں میں جگہ مل جائے۔ امت مسلمہ کبھی انکا یہ خواب پورا نہیں ہونے دی گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -