لاک ڈاؤن کے باوجود بچو ں کو حفاظتی ٹیکے لگانے کا سلسلہ جاری

لاک ڈاؤن کے باوجود بچو ں کو حفاظتی ٹیکے لگانے کا سلسلہ جاری

  

لاہور(پ ر)ڈائریکٹر توسیعی پروگرام برائے حفاظتی ٹیکہ جات پنجاب ڈاکٹر بشیر احمدصدیقی نے کہا ہے کہ پنجاب میں لاک ڈاؤن صورتحا ل کے باوجود پیدائش سے پانچ سال تک کے بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگانے کا سلسلہ جاری ہے۔اس سلسلے میں محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر پنجاب نے صوبہ بھر کے تمام ویکسینیٹرز کو ذاتی حفاظتی سامان مہیا کر دیا ہے۔ڈائریکٹر حفاظتی ٹیکہ جات پروگرام پنجاب نے کہا کہ دنیا بھر میں ہر سا ل 24تا 30اپریل ورلڈ امیونائزیشن ویک منایا جاتا ہے جو اس سال عالمی وباء کی وجہ سے نہیں منایا جا رہا۔انھوں نے کہا کہ اس ہفتے کا مقصد والدین میں حفاظتی ٹیکوں کی افادیت سے متعلق آگاہی فراہم کرنا ہے۔ڈاکٹر بشیر احمد صدیقی نے کہا کہ حفاظتی ٹیکے بچوں کو دس مہلک بیماریوں سے بچاتے ہیں تاہم اگر بچوں کو بروقت ان بیماریوں سے بچاؤ کی ویکسین نہ لگائی گئی تو اس سے انکی قوت مدافعت میں کمی واقع ہو گی۔

جس سے خسرہ اور دیگر مہلک بیماریوں کے پھیلنے کا خدشہ ہو سکتا ہے۔انھوں نے کہا کہ ایسے والدین جن کے بچے اس عمر میں ہے کہ انہیں حفاظتی ٹیکے لگوانے ضروری ہے تو وہ آج ہی قریبی ای پی آئی سنٹر سے اپنے بچوں کو ویکسین لازمی لگوائیں۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی صورتحال کے پیش نظر معمولات زندگی کی تمام سر گرمیاں معطل ہے تاہم سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر کیپٹن (ر)محمد عثمان کی ہدایت پرپنجاب بھرمیں ویکسینیٹرز اور سپروائزر ی سٹاف پوری تندہی سے اپنی خدمات سرانجام دے رہاہیں۔ ڈاکٹر بشیر احمد صدیقی نے والدین سے اپیل کی ہے کہ وہ ای پی آئی سنٹر آتے وقت کورونا وائرس سے بچاؤ کی حفاظتی تدابیر لازمی اپنائیں۔انھوں نے کہا کہ والدین اگر خود کھانسی، بخار کا شکار ہوں تو گھر کے صحت مند افراد کو بچوں کے ساتھ ویکسینیشن لگوانے بھیجیں تاہم بچوں کو ویکسین ہر حال میں لازمی کروائیں۔انھوں نے کہا کہ ای پی آئی پروگرام پنجاب یونیسف اور عالمی ادارہ صحت کے تعاون سے بچوں کو ویکسین کی بلاتعطل فراہمی کی ہر ممکن کوشش کر رہا ہے اور اس سلسلے میں سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر کیپٹن (ر)محمد عثمان زیرو ٹالرینس پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -