نعیم میر کی طرف سے ڈاکٹرز کو حفاظتی کٹس کی تقسیم

نعیم میر کی طرف سے ڈاکٹرز کو حفاظتی کٹس کی تقسیم

  

لاہور(کامرس ڈیسک) آل پاکستان انجمن تاجران کے جنرل سیکرٹری نعیم میرنے کہا ہے کہ حکومت 18 ارب ٹیکس کی مد میں ریلیف کی باتیں کر رہی ہے لیکن بتایا جائے وہ ریلیف کون سے تاجروں کو دیا گیا ہے؟ وزیراعظم نے کمرشل بلوں پر ریلیف تو دیا لیکن یہ اونٹ کے منہ میں زیرے کے برابر ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہو ں نے یہاں میڈیا کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر چیف آرگنائزر لاہور انجمن تاجران میاں خلیل عبیر،ایڈیشنل جنرل سیکریٹری لاہوررضوان بٹ،ذوالفقار بھٹی صدر گلبرگ ٹاؤن سمیت دیگرتاجر رہنما بھی موجود تھے۔ قبل ازیں نعیم میر کی جانب سے ینگ ڈاکٹرز کو سروسز ہسپتال میں کرونا کے بچاؤ کیلئے حفاظتی کٹس فراہم کی گئیں،جس پر ڈاکٹرز نے تاجر برادری بالخصوص نعیم میرکا خصوصی طور پر شکریہ ادا کیااور کہاکہ غیر جمہوری رویہ اختیار کر کے حکومت نہیں چل سکتی اگر تاجر آواز اٹھائے تو اسے جیل بھیج دیا جاتا ہے۔ نعیم میر نے کہا کہ یہ حکومت کا کام ہے کہ فرنٹ لائن پر لڑنے والے ڈاکٹرز کو حفاظتی کٹس اور سہولیات فراہم کرے لیکن حکومت کا کام تاجر اور سول سوسائٹی کر رہی ہے، مخیر حضرات اور این جی اوز کو بھی ڈاکٹر کی مدد کرنے کی ضرورت ہے۔ ایک سوال کے جواب میں نعیم میر کا کہنا تھا کہ حکومت نے 18 ارب کے ٹیکس ریلیف کی بات کی ہے بتایا جائے یہ ٹیکس ریلیف کس تاجر کو دیا گیا ہے؟

وزیراعظم عمران خان نے کمرشل بلوں میں ریلیف دینے کی بات کی ہے لیکن یہ ریلیف اونٹ کے منہ میں زیرے کے برابر ہے۔نعیم میر نے مطالبہ کیا کہ حکومت تاجروں کے ساتھ ملاقات کرے اور وبا سے بچنے کیلئے ایس او پیز بنائے تاکہ چھوٹا تاجر بھوک سے نہ مرے۔

مزید :

کامرس -