پیپلز پارٹی کراچی والوں سے جانبدارانہ رویہ اختیار کیے ہوئے ہے: مصطفی کمال

پیپلز پارٹی کراچی والوں سے جانبدارانہ رویہ اختیار کیے ہوئے ہے: مصطفی کمال

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے دوران سندھ حکومت کراچی میں کاروبار کرنے والوں سے جانبدارانہ رویہ اختیار کیے ہوئے ہے، محسوس ہوتا ہے کہ کراچی کے ایک خاص طبقے اور ایک خاص زبان بولنے والوں کے کاروبار کو تباہ کیا جارہا ہے جو ایک تشویشناک عمل ہے۔ پاک سر زمین پارٹی حکومتی تعصب کی سخت مذمت کرتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیشنل کونسل اور سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے اراکینِ سے پاکستان ہاس میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ سندھ کو نوے فیصد بجٹ فراہم کرنے والے کراچی میں مسائل کے انبار لگے ہوئے ہیں، پی پی پی سندھ پر بارہ سال سے حکومت کررہی ہے لیکن کراچی کے ساتھ ہمیشہ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ 136 اسٹنٹ کمشنر لگائے گئے، ان میں سے ایک بھی اردو بولنے والا نہیں ہے، جب سندھ کی بیوروکریسی سے تعلق رکھنے والے ایک ہی خاندان کے پانچ پانچ افراد کیمشن حاصل کریں گے تو عوام کے اذہان میں سوالات اٹھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں کورونا وائرس کے بعد سیاست بدل گئی لیکن کہیں کی سیاست نہیں بدلی ہے تو وہ صرف پاکستان میں نہیں بدلی اور کتنے افسوس کی بات ہے پاکستان میں کورونا وائرس پر سیاست ہور ہی ہے، خدنخواستہ اٹلی جیسی صورت حال ہوگئی تو ہم کیا کریں گے۔ یہ وقت انسانیت اور پاکستان کو بچانے کا ہے کیونکہ کورونا وائرس پوری انسانیت کیلئے خطرہ ہے۔ مصطفی کمال نے مزید کہا کہ پی ایس پی کا فلاحی ادارہ پی ایس پی فانڈیشن دن رات کام کر رہا ہے اور سحری کے اوقات میں بھی مستحقین کو راشن سمیت پکا ہوا کھانا بھی پہنچا رہا ہے۔ پی ایس پی فانڈیشن اللہ کی رضا کی خاطر اپنی مدد آپ کے تحت سفید پوش خاندانوں کی عزت نفس مجروح کیے بغیر انکی مدد کررہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -