سندھ حکومت نے اسکول فیس میں 20فیصد رعایت کا پرانا نوٹیفکیشن واپس لے لیا

سندھ حکومت نے اسکول فیس میں 20فیصد رعایت کا پرانا نوٹیفکیشن واپس لے لیا

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ حکومت نے اسکولوں کی فیس میں 20 فیصد رعایت کا پرانا نوٹیفکیشن واپس لے لیا، رولز میں ترمیم کرکے تحت نیا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے گا، سندھ ہائیکورٹ نے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سندھ کے بیان کے بعد درخواستیں نمٹا دیں۔ بدھ کوسندھ ہائیکورٹ میں سندھ حکومت کی جانب سے اسکول فیسوں میں 20 فیصد رعایت کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی، سندھ حکومت نے اسکولوں کی فیس میں 20 فیصد رعایت کا پرانا نوٹیفکیشن واپس لے لیا،ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سندھ نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ اسکول فیس کے حوالے سے نئے رولز بنائے ہیں آرڈیننس آچکا ہے آرڈیننس منظوری کے لئے گورنر سندھ کو بھیجوادیا ہے،جس پر عدالت نے ڈی جی پرائیوٹ اسکول سے استفسار کیا کہ کس اتھارٹی کے تحت آپ نے نوٹفیکشن جاری کیا تھا؟ آپ ایک سنئیر آفیسر ہیں کسی کو تنگ کرنے نہیں بیٹھے ہیں،آپ نے سوچا نہیں کہ کس قانون کے تحت نوٹفیکشن جاری کیا ہے؟ ڈی جی پرائیوٹ اسکولز نے عدالت کو بتایا کہ وزیر اعلی سندھ کے کہنے پر فیس میں کمی کا نوٹفیکشن جاری کیا تھا، جس پر عدالت نے ریمارکس دیئے کہ حالات جیسے بھی ہوں وزیر اعلی سندھ آپ کو کنویں میں کودنے کا کہیں گے تو کود جاو گے،پہلے آپ کو اختیار نہیں تھا اب ملا ہے یہ اختیار لہذا آئندہ خیال رکھیں،عدالت نے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سندھ کے بیان کے بعد درخواستیں نمٹا دیں

مزید :

صفحہ اول -