موجودہ مشکل صورتحال میں ہر طبقے کو اپنے حصہ کا کردار ادا کرنا ہو گا: محمود خان

      موجودہ مشکل صورتحال میں ہر طبقے کو اپنے حصہ کا کردار ادا کرنا ہو گا: ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے منتخب عوامی نمائندوں پر زور دیا ہے کہ وہ موجودہ صورتحال میں سماجی فاصلوں اور دیگر احتیاطی تدابیر کے حوالے سے عوام کو زیاد ہ سے زیادہ آگہی دینے اور ان پر عمل درآمد کیلئے لوگوں کو قائل کرنے میں اپناموثر کردار ادا کریں۔ منتخب عوامی نمائندے اپنے اپنے حلقہ ہائے نیابت میں مقامی انتظامیہ کے ساتھ قریبی روابط رکھیں اور عوام کو کورونا سے محفوظ بنانے کیلئے سلسلے میں جزوی لاک ڈاؤن اور سماجی فاصلوں کے حوالے سے حکومتی احکامات پر عمل درآمد کو یقینی بنانے کیلئے انتظامیہ کے ساتھ روزانہ کی بنیادوں پر رابطے رکھیں۔ اُنہوں نے کہا ہے کہ موجودہ مشکل صورتحال سے نمٹنے کیلئے حکومت اور انتظامیہ کے ساتھ ساتھ منتخب عوامی نمائندوں اور معاشرے کے ہر طبقے کو اپنے اپنے حصے کا کردارادا کرنا ہو گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز ضلع مردان سے منتخب ممبران صوبائی اسمبلی کے ایک وفد سے گفتگو کر تے ہوئے کیاجنہوں نے وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں اُن سے ملاقات کی اور موجودہ صورتحال کے تناظر میں مختلف اُمور پر تبادلہ خیال کیا۔ وفد میں افتخار مشوانی، عبد السلام آفریدی، ملک شوکت اورامیر فرزندشامل تھے۔وفد نے وزیراعلیٰ کو ضلع مردان میں لاک ڈاؤن کی صورتحال، سماجی فاصلوں پر عمل درآمد کی صورتحال، موجودہ صورتحال میں لوگوں کو درپیش مسائل اور دیگر متعلقہ معاملات سے آگاہ کیا۔ وفد سے باتیں کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبائی حکومت وزیرا عظم عمران خان کے وژن کے مطابق بیک وقت دو محاذوں پر لڑرہی ہے ایک طرف لوگوں کو کورونا کی وباء سے بچانا ہے تو دوسری طرف اُنہیں بھوک اور افلاس سے بھی بچانا ہے۔ اسلئے جزوی لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے لوگوں اور خصوصاً یومیہ اُجرت پر کام کرنے والے طبقے کو درپیش مشکلات کا بھر پور احساس ہے اور یہی وجہ ہے کہ حکومت نے تعمیرات کی صنعت کو مشروط طور پر کھولنے کی اجازت دی ہے تاکہ دیہاڑی دار طبقہ اپنے لئے روزی روٹی کما سکے۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبائی حکومت اس وقت مشکل وقت میں معاشرے کے کمزور طبقوں کو ریلیف دینے کیلئے تمام تر وسائل استعمال میں لارہی ہے۔اُنہوں نے منتخب عوامی نمائندوں اور مخیر حضرات پر زور دیا کہ وہ مشکل کی اس گھڑی میں اپنے اردگرد نادار اور کمزور لوگوں کا بھر پور خیال رکھیں۔ 

مزید :

صفحہ اول -