وزیراعظم، وزراء مختلف ایشوزپر قوم کو گمراہ کررہے ہیں، افتخار خان

  وزیراعظم، وزراء مختلف ایشوزپر قوم کو گمراہ کررہے ہیں، افتخار خان

  

مظفرگڑھ (نامہ نگار) ملکی معیشت کا بیڑہ غرق کرنے والے کپتان کی نظریں اب 18ویں ترمیم کے خاتمے کیلئے جم گئی ہیں جس کی پرزور مذمت کرتے ہیں صوبوں کے حقوق پر ڈاکہ ڈالنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی وفاقی حکومت سندھ حکومت کی واجب الادا رقم (بقیہ نمبر39صفحہ6پر)

125 ارب روپے اور پنجاب حکومت کی 135 ارب روپے دبانے کی بجائے انہیں فوری طور پر ادا کرے ان خیالات کا اظہار پیپلزپارٹی جنوبی پنجاب کے انفارمیشن سیکرٹری و رکن قومی اسمبلی نوابزادہ افتخار احمد خان نے اپنی رہائش گاہ پر نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ 18 ویں ترمیم سے صوبوں کو خودمختاری دی گئی جس کے سبب صوبہ سندھ میں جدید کارڈیالوجی ' ٹاپ یونیورسٹیز اور بجلی کے منصوبے قائم کیے گئے جو دنیا بھر کے بہترین منصوبوں میں سے ایک ہیں یہ ترقی وفاق کو ناگوار گزری ہے جس کی وجہ سے وفاق 18 ویں ترمیم کے پیچھے پڑچکا ہے انہوں نیکہا کہ وزیراعظم اور وفاقی وزراء صرف جھوٹ بولنے کے عادی ہیں اور قوم کو گمراہ کر رہے ہیں جبکہ سندھ حکومت ان کے جھوٹ کا جواب عوام کی عملی خدمت سے دے رہی ہے تھر سمیت سندھ کے 11 اضلاع میں جدید یونیورسٹیوں ' کارڈیالوجی ہسپتال' جدید کینسر ہسپتال ' لیور اور گردے کے جدید ٹیکنالوجی والے ہسپتال سمیت پاور پلانٹ سے بجلی کی پیدوار کی فراہمی ہی سندھ حکومت کے کارنامے ہیں جو وفاق کو ہضم نہیں ہورہے انہوں نیکہا کہ ملکی خزانے کا 60 فیصد ریونیو سندھ گورنمنٹ دے رہی ہے پاکستان بھر کے افراد روزگار کیلئے سندھ کا رخ کرتے ہیں مگر وفاق 18 ویں ترمیم کی مد میں 125 ارب روپے سندھ کے دبا کر ان کے حق پر ڈاکہ ڈال رہی ہے واجب الادا رقم کے مطالبہ پر 18 ویں ترمیم کے خاتمے کیلئے تگ ودو کرنے کے چکر میں ہے جس کی مذمت کرتے ہیں انہوں نیکہا کہ 18 ویں ترمیم سے خیبر پختونخواہ کو شناخت ملی' بلوچستان کو حق ملا مگر نااہل کپتان کی نیندیں حرام ہو چکی ہیں انہوں نیکہا کہ ملک کی ترقی کا سوچنے کی بجائے وفاق حقوق غصب کر رہی ہے مگر عوام حقیقت جان چکی ہے جبکہ سلیکیڈڈ حکمرانوں کے جانے کا وقت ہوا چاہتا ہے آئندہ حکومت پیپلزپارٹی کی ہو گی اور بلاول بھٹو زرداری وزیراعظم بن کر عوام کو ریلیف دیں گے۔

افتخارخان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -