طاہر اقبال چوہدری کاگورنر سے ٹیلی فونک رابطہ، پیف مسائل پربات چیت

طاہر اقبال چوہدری کاگورنر سے ٹیلی فونک رابطہ، پیف مسائل پربات چیت

  

وہاڑی(بیورورپورٹ،نامہ نگار)گورنر پنجاب ایم سرور چوہدری نے کہا ہے کہ پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن سے منسلک سکولز کا صوبہ میں معیار تعلیم شرح خواندگی بڑھانے اور فروغ تعلیم میں انتہائی اہم کردار ہے ان کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں (بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

گے یہ بات انہوں نے فون پر پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی طاہر اقبال چوہدری سے پیف کے مسائل پربات چیت کرتے ہوئے کہی اس موقع پر پیف پارٹنر سکولز کے مالکان اظہر بخاری،نذر عباس جوئیہ، ملک قمر کھنڈ، راؤ ناصر عزیز،میاں جہانزیب یوسف بھی موجود تھے گورنر پنجاب نے 4ماہ سے رکے فنڈز کی فوری بحالی اور 5ماہ سے غیر قانونی کٹوتیوں کی جلد واپسی کی یقین دہانی کرائی رکن قومی اسمبلی طاہر اقبال چوہدری نے گورنر پنجاب ایم سرور چوہدری کو پیف کے مسائل حل کرنے پر زور دیتے ہوئے کہاکہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے پنجاب کا پرائیوئٹ ایجوکیشن کا شعبہ بری طرح متاثر ہوا ہے بیشتر پیف سکولز مالی بحران کا شکار ہو چکے ہیں جو کہ اپنے اساتذہ کو تنخواہیں نہیں دے سکے جس کی وجہ سے انکے چولہے ٹھنڈے پڑ چکے ہیں کورونا ریلیف پراجیکٹ سے ان سکولز کے مسائل حل کرنا بہت ضروری ہے ایم این اے طاہر اقبال چوہدری نے سیکرٹری سکولز مسز سارہ اسلم،ایم ڈی پنجاب اور چیئرمین پیف سے فون پر رابطہ کیا لیکن ان سے میٹنگ کی وجہ سے رابطہ نہ ہوسکا پیف پارٹنر سکولز کے مالکان نے گورنر پنجاب اور ایم این اے کو بتایا کہ کسی ایک سکول میں سیس ڈیٹا پروگرام کے تحت (ب) فارم کے ذریعے داخل ہونے والے طلبہ و طالبات غیر حاضر تو ہو سکتے ہیں مگر فیک بالکل نہیں اور نہ ہی کس پرائیویٹ یا سرکاری سکول میں داخلہ ہو سکتا ہے انہوں نے مطالبہ کیاکہ غیر حاضر طلبہ کا غیر جانبدرانہ فرانزک اور تھرڈ پارٹی سے آڈٹ کروایا جائے اور بے قاعدگی کے مرتکب سکولز کو جرمانے کئے جائیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -