تفضل رضوی کے بعد پی سی بی خود بھی میدان میں آ گیا، شعیب اختر کو حیران پریشان کر دیا

تفضل رضوی کے بعد پی سی بی خود بھی میدان میں آ گیا، شعیب اختر کو حیران پریشان ...
تفضل رضوی کے بعد پی سی بی خود بھی میدان میں آ گیا، شعیب اختر کو حیران پریشان کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے عمر اکمل پر پابندی کے فیصلے اور بورڈ کے قانونی مشیر تفضل رضوی کے حوالے سے سابق فاسٹ باؤلر شعیب اختر کے بیان کا نوٹس لیتے ہوئے اسے مایوس کن، غیر مناسب اور ہتک آمیز قرار دیدیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پی سی بی نے اس حوالے سے جاری اپنے بیان میں کہا ہے کہ شعیب اختر نے پی سی بی کے لیگل ڈیپارٹمنٹ اور قانونی مشیر کے خلاف جس طرح کے الفاط کا انتخاب کیا اس پر مایوسی ہوئی ہے۔ شعیب اختر نے جس زبان کا استعمال کیا ہے وہ انتہائی غیر مناسب اور ہتک آمیز ہے اور کسی بھی مہذب معاشرے میں اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔

پی سی بی نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ پی سی بی کے قانونی مشیر تفضل رضوی نے اپنی ذاتی حیثیت میں شعیب اختر کے خلاف ہتک عزت کا دعویٰ دائر اور فوجداری مقدمے کا آغاز کیا ہے جبکہ پی سی بی بھی اس حوالے سے اپنا حق محفوظ رکھتا ہے۔

واضح رہے کہ 27 اپریل کو پی سی بی ڈسپلنری پینل کے چیئرمین جسٹس (ر) فضل میراں چوہان نے عمر اکمل پر اینٹی کرپشن کوڈ کی خلاف ورزی پر 3 سال کیلئے مکمل پابندی عائد کردی تھی۔اس کے بعد سابق ٹیسٹ کرکٹر اور سپیڈ سٹار شعیب اختر نے مڈل آرڈر بیٹسمین عمر اکمل کے حق میں بیان دیتے ہوئے 3 سالہ پابندی کی مخالفت کی تھی۔

شعیب اختر نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے دراصل عمر اکمل پر غصہ نکالا ہے، تین سال کی پابندی بہت سخت سزا ہے۔شعیب اختر نے پی سی بی کے قانونی مشیر تفضل رضوی پر بھی تنقید کی تھی اور کہا تھا کہ تفضل رضوی تمام کھلاڑیوں کے مقدمات الجھاتے ہیں، وہ ماضی میں مجھ سے بھی کیس ہار چکے ہیں۔

مزید :

کھیل -