نئے کپڑوں اور جوتوں کا لالچ دے کر 9 سالہ معصوم بچی کے ساتھ زیادتی

نئے کپڑوں اور جوتوں کا لالچ دے کر 9 سالہ معصوم بچی کے ساتھ زیادتی
نئے کپڑوں اور جوتوں کا لالچ دے کر 9 سالہ معصوم بچی کے ساتھ زیادتی

  

حیدر آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) صوبہ سندھ کے دوسرے بڑے شہر حیدر آباد میں 9 سالہ بچی کو نئے جوتوں اور کپڑوں کا لالچ دے کر جنسی زیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کردیا گیا ۔

نجی ٹی وی کے مطابق حیدر آباد کے علاقے بنگالی پاڑے سے بدھ کے روز 9 سالہ بچی رخسار لاپتا ہوئی تھی ۔ بچی کے والد نے بتایا کہ اس کی بیٹی یہ کہہ کر گھر سے گئی تھی کہ اسے ایک انکل نے سامان دینے کیلئے بلوایا ہے۔ رخسار پنے چھوٹے بھائی کے ساتھ گئی تھی لیکن ملزم نے بھائی کو یہ کہہ کر وہاں سے رخصت کردیا کہ وہ بہن کو سامان دے کر بھجوا دے گا۔

پولیس کے مطابق بچی کے لاپتہ ہونے کی اطلاع پرجائے وقوعہ سے بچی کے گھر تک جیو فینسنگ کی گئی اور سی سی ٹی وی کیمروں کی مدد لی گئی جس نے اسی علاقے کے رہائشی صدیق نامی ملزم کی نشاندہی ہوئی۔

پولیس نے ملزم سے تفتیش کی تو اس نے لاش برآمد کرادی۔ ملزم کے خلاف اغوا کا مقدمہ پہلے ہی درج کیا جاچکا ہے جس میں زیادتی اور قتل کی دفعات کا اضافہ کیا جائے گا۔

مزید :

علاقائی -سندھ -حیدرآباد -