کورونا وائرس لاک ڈاﺅن، گل احمد کو 45 کروڑ روپے کا نقصان، سینکڑوں ملازمین نوکری سے فارغ

کورونا وائرس لاک ڈاﺅن، گل احمد کو 45 کروڑ روپے کا نقصان، سینکڑوں ملازمین ...
کورونا وائرس لاک ڈاﺅن، گل احمد کو 45 کروڑ روپے کا نقصان، سینکڑوں ملازمین نوکری سے فارغ

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس اور لاک ڈاﺅن کی وجہ سے ہر ملک کی معیشت کو شدید دھچکا لگا ہے اور معاشی تجزیہ کار اس حوالے سے پاکستان کے متعلق بھی خطرناک پیش گوئی کر چکے ہیں۔ اب پاکستان میں اس کے آثار بھی نمودار ہونے شروع ہو گئے ہیں۔ پروپاکستانی کے مطابق گل احمد ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ، جو پاکستان کے معروف ترین کلاتھ برانڈز میں سے ایک ہے اور ٹیکسٹائل کی مختلف مصنوعات برآمد بھی کرتا ہے، کی طرف سے بتایا ہے کہ اسے رواں سال کی پہلی سہ ماہی میں جنوری سے مارچ تک 45کروڑ 20لاکھ روپے کا نقصان پہنچ چکا ہے اور اس کی وجہ کورونا وائرس اور لاک ڈاﺅن کے سبب ملکی اور عالمی مارکیٹس کا بند ہونا ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال اسی عرصے میں گل احمد ٹیکسٹائل کو 65کروڑ 40لاکھ روپے کا منافع ہوا تھا۔ اتنے منافعے سے بھاری نقصان میں جانے کی وجہ سے کمپنی کو450 لوگوں کو ملازمتوں سے نکالنا پڑ گیا ہے جس سے ان سینکڑوں مزدوروں اور کاریگروں کے گھروں کے چولہے ٹھنڈے ہو گئے ہیں۔ کمپنی کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ رواں مالی سال میں کورونا وائرس سے پہلے بھی اس کے منافع میں بہت زیادہ کمی واقع ہو رہی تھی۔

رواں مالی سال کے پہلے 9ماہ میں اس کا منافع 77فیصد کم ہو کر 61کروڑ 60لاکھ روپے پر آ گیا تھا جو گزشتہ مالی سال کے دوران 2ارب 70کروڑ روپے تھا۔اس پر کورونا وائرس اور لاک ڈاﺅن نے رہی سہی کسر نکال دی۔ کمپنی کے کل ملازمین کی تعداد 1ہزار سے زائد ہے اور انتظامیہ کا کہنا ہے کہ وہ ان لوگوں کی نوکریاں بچانے کے لیے حکومت کی طرف دیکھ رہے ہیں کہ وہ کچھ سپورٹ اور ریلیف دے تاکہ کمپنی کسی طرح اس مالی بحران سے نکل پائے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -