اوگرا سکینڈل کیس کے مرکزی ملزم توقیر صادق کے جسمانی ریمانڈ میں 12 دن کی توسیع

اوگرا سکینڈل کیس کے مرکزی ملزم توقیر صادق کے جسمانی ریمانڈ میں 12 دن کی توسیع
اوگرا سکینڈل کیس کے مرکزی ملزم توقیر صادق کے جسمانی ریمانڈ میں 12 دن کی توسیع

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) احتساب عدالت نے اوگرا سکینڈل کے مرکزی کردارتوقیر صادق کے جسمانی ریمانڈ میں 12 دن کی توسیع کر دی ہے اور 10ستمبر کو دوبارہ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔ ذرائع کے مطابق اوگرا سکینڈل کیس کے مرکزی ملزم توقیر صادق کو احتساب عدالت میں پیش کیا گیا تو نیب نے عدالت سے توقیر صادق کے ریمانڈ میں 14 دن کی توسیع کرنے کی استدعا کی۔ نیب پراسیکیوٹربیرسٹر سعید نے عدالت کو بتایا کہ 22اگست کو سوئی سدرن گیس کمپنی کے 4سینئر افسران کے بیانات رکارڈ کئے گئے جبکہ یو اے ای کے بینک اکاﺅنٹ سے ریکوری کیلئے مشترکہ قانونی مدد کی درخواست بھی کر دی گئی ہے۔ بیرسٹر سعید نے کہا کہ اس مقدمے میں اب تک 3.2ارب روپے کی ریکوری کر لی گئی ہے توقیر صادق کے پارٹنرز نے کمیشن کی مد میں وصول کی گئی 1کروڑ34لاکھ روپے کی رقم چیک کی صورت میں واپس کی ہے جبکہ دو مزید ملزمان میں سے ایک اجمان اور ایک کینیڈا میں ہے۔ نیب نے توقیر صادق کی طبی معائنے کی رپورٹ بھی عدالت میں پیش کی جس کے مطابق توقیر صادق کی بینائی مکمل طور پر درست ہے اور ہاتھ کا درد پرانا ہے جس کی طبی امداد کی ضرورت ہے۔ توقیر صادق کے وکیل نے نیب کی طرف سے مزید ریمانڈ لینے کی استدعا کی مخالفت کی اور کہا کہ 14دنوں کے ریمانڈ میں 8دن تک تفتیش ہی نہیں کی گئی، عدالت مزید ریمانڈ نہ دے۔ سماعت کے بعد عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے توقیر صادق کے جسمانی ریمانڈ میں 12دن کی توسیع کرتے ہوئے 10ستمبر کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا۔

مزید : اسلام آباد