جاپان:2020 اولمپک اسٹیڈیم کی لاگت میں 40فیصد سے زائد کمی

جاپان:2020 اولمپک اسٹیڈیم کی لاگت میں 40فیصد سے زائد کمی

ٹوکیو( نیٹ نیوز) جاپان2020 اولمپک اسٹیڈیم کی لاگت میں 40فیصد سے زائد کمی کررہا ہے۔قبل ازیں ٹوکیو کے اس نئے اسٹیڈیم پر2 بلین ڈالر خرچ کرنے کا منصوبہ تھا، لاگت میں کمی کیلیے شائقین کے اسٹینڈز میں ایئرکنڈیشنڈ سہولیات ختم اورنشستوں کی تعداد کم کی جائے گی۔تفصیلات کے مطابق جاپان نے گذشتہ روز ٹوکیو کے نئے2020 اولمپک اسٹیڈیم کی لاگت میں40 فیصد سے زائد کٹوتی کا اعلان کیا ہے۔اصل منصوبے کے تحت اس اسٹیڈیم پر 2 بلین ڈالر خرچ ہونا تھے، کابینہ نے تعمیراتی لاگت کو 155 بلین ین (1.28 بلین ڈالر) تک رکھنے کی منظوری دی ہے جو نئے تجویزکردہ ڈیزائن کی اندازاً 265 بلین ین سے بھی کم ہے، اصل لاگت دنیا کے سب سے زیادہ قیمتی اسپورٹس اسٹیڈیم کی حیثیت اختیار کرجاتی، جاپانی وزیر اعظم شنزو ایب نے منصوبے کی منظوری کے بعد ہونیوالی کابینہ میٹنگ میں بتایا کہ ہم نے لاگت میں کافی کمی کردی ہے۔البتہ ہمیں 2020 گیمز کیلیے اسٹیڈیم کی تکمیل کی یقین دہانی کی ضرورت ہے، تبدیلیوں میں شائقین کے اسٹینڈز سے ایئرکنڈیشننگ سہولیات ختم کرنے اور نشستوں کی گنجائش میں4 ہزار کمی کے ساتھ 68 ہزار افرادکے بیٹھنے کا انتظام کرنا ہے،گذشتہ ماہ جاپانی وزیر اعظم نے انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی کو حیران کرتے ہوئے عراقی برطانوی ماہر تعمیرات زاہا ہدید کے ڈیزائن کردہ اسٹیڈیم کو زیادہ لاگت کی بنیاد پر منسوخ کردیا تھا جبکہ اس حوالے سے اب انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ہم اس پربھرپور کام کریں گے اور اس کا مقصد بچت کرنا ہے اور اس کے لئے ہم نے پلان بھی تیار کیا ہے جس پر بھرپور عمل کیا جائے گا اور ہمیں یقین ہے کہ اس حوالے سے ہمیں کامیابی ملے گی۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...