پنجاب میں جن وزراء کے خلاف انکوائریاں چل رہی ہیں وہ فارغ ہو جائیں گے

پنجاب میں جن وزراء کے خلاف انکوائریاں چل رہی ہیں وہ فارغ ہو جائیں گے

تجزیہ: محرم راز

حکومت پنجاب نے سندھ کے بعد پنجاب کی باری کے نعروں کی روشنی میں پنجاب میں کابینہ کے تمام ارکان اور اعلیٰ بیوروکریٹس کو ہدائت کی ہے کہ اگر ان کے خلاف نیب یا کسی بھی سرکاری ادارہ میں کوئی انکوائری زیر التوا ہے تو وہ فوری طور پر مطلع کریں۔ اس ضمن میں بالخصوص کابینہ ارکان کو کہا گیا ہے کہ اگر ان کے خلاف کسی بھی ادارے میں کوئی درخواست زیر التوا ہے تو اس سے فوری طور پر مطلع کیا جائے۔ اس حوالہ سے ایک انٹیلی جنس ادارہ کو بھی کہا گیا ہے کہ وہ پنجاب کابینہ کے ارکان کے حوالہ سے تفصیلی رپورٹ دیں کہ ا ن پر کسی قسم کا کوئی الزام تو نہیں۔ اسی طرح پنجاب کابینہ کے ارکان کو اثاثوں کے حوالہ سے بھی تفصیلات فراہم کرنے کے لئے کہا گیا ہے۔ بالخصوص کابینہ کے ارکان کو اپنے ان اثاثوں کی تفصیلات فراہم کرنے کے لئے بھی کہا گیا ہے جو انہوں نے وزیر بننے کے بعد بنائے ہیں۔ اسی طرح پاکستان سے باہر اثاثوں کی تفصیلات فراہم کرنے کے لئے بھی کہا گیا ہے۔

اس ضمن میں وزیر اعلیٰ پنجاب نے واضح کیا ہے کہ اگر کابینہ کے کسی بھی رکن کے خلاف کوئی بھی انکوائری زیر التواء ہے۔ تو وہ فوری طور پر اسے ختم کروائے ورنہ اس کو کابینہ سے فارغ کر دیا جائے گا۔ یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ وزرا اس ہدائت نامہ کے بعد متعلقہ اداروں سے نو انکوائری سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کے لئے کوشاں ہیں۔تا کہ وہ اپنے آپ کو محفوظ کر سکیں۔ اسی طرح اہم عہدوں پر تعینات بیوروکریٹس بھی اس کوشش میں ہیں کہ وہ خود کو محفوظ کر سکیں۔

مزید : تجزیہ


loading...