قومی ہاکی ٹیم مسلسل زوال پذیر ی کا شکار

قومی ہاکی ٹیم مسلسل زوال پذیر ی کا شکار

پاکستان ہاکی ٹیم اس وقت شدید مشکلات کا شکار ہے ایک طویل عرصہ سے ٹیم پر برا وقت چل رہا ہے اولمپکس اختر رسول جو کافی عرصہ سے پاکستان ہاکی فیڈریشن کے سربراہ ہیں انہوں نے اپنے دورہ میں کچھ بھی نہیں کیا اور جب ان سے کچھ نہیں ہوا اور ٹیم بہت ہی ناقص کارکردگی پر پہنچ گئی تو انہوں نے عہدے سے دیدیا اور اس کے بعد ان کی ذمہ داری ختم ہوگئی اس طرح تو کھیل ترقی نہیں کر سکتا اس کے بعد پی ایچ ایف کے ہیڈ کوچ شیخ جو کافی عرصہ سے ٹیم کے ساتھ تھے اور کھلاڑیوں کو سیکھارہے تھے ان کا ایک بہت بڑا نام ہے اور وہ خود بھی ماضی میں ٹیم کا حصہ رہ چکے ہیں ان سے بھی جب کچھ نہیں ہوا اور جب بات ان کی ناقص کارکردگی پر پہنچ گئی اور جب آخر ہوگئی تو انہوں نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیا ہمارے ملک میں سب سے آسان کام یہ ہی ہے کہ جب بھی ایسے لوگوں کواپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہوتی ہے تو اس وقت وہ اپنا کردار ادا کرتے ہوئے نظر نہیں آتے ہیں اور اس سے ٹیم کو بہت نقصان ہوتا ہے۔ بہرحال اب یہ دونوں تو کھیل سے دور ہوچکے ہیں لیکن اب کیا آنے والے اس کھیل کو ایک مرتبہ دوبارہ پھر عروج پر لے کر جائیں گے اور کیا ان کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات بھی کام آئیں گے یہ وہ سوال ہے جس کا جواب ابھی تو کوئی نہیں دے سکتا، لیکن شائقین جو اس کھیل سے بہت پیار ک تے ہیں او ر اپنی قومی ٹیم کو ترقی کرتا ہوا دیکھنا چاہتے ہیں ان کے دلوں میں ضرور ہے اور امید ہے کہ نئی ٹیم اس حوالے سے اپنا بھرپور کردار ادا کرے گی اور پاکستانی ہاکی ٹیم کو اس کا حق دلوائے گی تاکہ وہ کھیل کے میدان میں بہت عمدہ پرفارمنس کا مظاہرہ کرنے میں کامیاب ہو جائیں، جبکہ دوسری جانب پی ایچ ایف حکام نے نیا ٹیلنٹ تلاش کرنے کا منصوبہ بنا لیا، نئی سلیکشن کمیٹی اور جونیئر ٹیم مینجمنٹ تشکیل دے کر ٹیلنٹ ہنٹ پروگرام کے ذریعے باصلاحیت کھلاڑیوں کو آگے لایا جائے گا۔تفصیلات کے مطابق پاکستان ہاکی فیڈریشن کے نئے صدر بریگیڈیئر(ر) خالد سجاد کھوکھر کے آتے ہی فیڈریشن میں تبدیلیوں کا سلسلہ شروع ہونے والا ہے، آئندہ 2 سے تین روز میں بڑے فیصلے متوقع ہیں۔ ذرائع کے مطابق فیڈریشن سالہا سال سے قومی ٹیم کا حصہ رہنے والے بعض کھلاڑیوں کی کارکردگی سے خوش نہیں اور چاہتی ہے کہ مرحلہ وار ان سے جان چھڑا کر نئے باصلاحیت کھلاڑیوں کو آگے لایا جائے۔ منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کے لیے پاکستان ہاکی فیڈریشن نے نئی سلیکشن کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے، دے دیا تھا، بعدازاں اپنے باس کی پیروی کرتے ہوئے خالد بشیر اور ایاز محمود بھی سلیکشن کمیٹی سے علیحدہ ہو گئے تھے۔ ذرائع کے مطابق چیف سلیکٹر کے لیے شہناز شیخ، منظور جونیئر اور شہباز سینئر سمیت بعض سابق اولمپئنز کے ناموں پر غور جاری ہے۔ شہنازشیخ ہیڈ کوچ کے عہدے سے مستعفی ہونے کے لئے تیار نہ تھے، فیڈریشن کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے سابق اولمپئن کو اس شرط پر راضی کیا کہ مستقبل میں انہیں نئی ذمہ داری دی جائے گی۔ہاکی فیڈریشن کی نئی قیادت کے لئے اب کڑا امتحان ہے پی ایچ ایف کے نئے سربراہ اس حوالے سے کیا اقدامات کرتے ہیں، لیکن امید ہے کہ و ہ اپنی ذمہ داریوں کو ضرورپورا کریں گے اور اس سے ملک میں ہاکی کو بہت فروغ ملے گا جو وقت کی اہم ضرورت بھی ہے۔

***

مزید : ایڈیشن 1


loading...