میرٹ سے ہٹ کر فیصلہ کرنے والا جج کمتر انسان ہے: جسٹس منظور

میرٹ سے ہٹ کر فیصلہ کرنے والا جج کمتر انسان ہے: جسٹس منظور
میرٹ سے ہٹ کر فیصلہ کرنے والا جج کمتر انسان ہے: جسٹس منظور

  


لاہور (آن لائن) انصاف اللہ کی صف، وہی اصل انصا کرتا ہے، ہم ججز دنیا کی زندگی چلانے کا ذریعہ ہیں، بہترین انصاف کرنے والے کا اجر دنیا و آخرت میں طے ہے، جوڈیشل اکیڈمی میں سل ججوں کی حلف برداری تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس منظور احمد ملک نے کہا ہے کہ جج صاحبان کو چاہیے کہ سوچ سمجھ کر، کسی دباﺅ کو خاطر میں لائے بغیر دلیری سے میرٹ پر فیصلے کریں، میرٹ سے ہٹ کر فیصلہ کرنے والا جج ایک کمتر انسان ہوتا ہے فاضل چیف جسٹس نے تقریب میں شریک نومنتخب سول ججوں سے کہا کہ آپ لوگون کو انصاف مہیا کریں گے تو اللہ تعالیٰ آپ کو انصاف دے گا، وہی ہمیں دنیا اور آخرت میں اس کا اجر دے گا کیونکہ وہ ہمارے تمام اعمال سے باخوبی واقف ہے، فاضل چیف جسٹس نے نومنتخب خواتین سول ججوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ان پر دوہری ذمہ داری ادا ہوتی ہے، ایک طرف تو انہوں نے بہترین انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے اور دوسری طرف اپنے رویے، کردار اور مضبوطی فیصلوں کی بدولت معاشرے کی عورت کے بارے منفی سوچ کو بدلنا ہے، فاضل چیف جسٹس نے کہا کہ جج کو زیب نہیں دیتا کہ کسی سائل کو ”تو“ کہہ کر مخاطب کرے اور کسی کی عزت نفس مجروح کرے، قبل ازیں رجسٹرار طارق افتخار احمد نے نومنتخب 369 سول ججوں سے اجتماعی طور پر ان کے عہدوں کا حلف لیا۔ نیا تقرری پانے والے سول ججوں میں 85 خواتین سول ججز بھی شامل ہیں۔

مزید : لاہور


loading...