بھوک کا شکار4 ملین شامی مہاجرین میں سے اکثریت دم توڑ جائے گی:کمشنر برائے مہاجرین اقوام متحدہ کا خدشہ

بھوک کا شکار4 ملین شامی مہاجرین میں سے اکثریت دم توڑ جائے گی:کمشنر برائے ...
بھوک کا شکار4 ملین شامی مہاجرین میں سے اکثریت دم توڑ جائے گی:کمشنر برائے مہاجرین اقوام متحدہ کا خدشہ

  


زاہل (مانیٹرنگ ڈیسک) لبنان کے شہر زاہل میں مہاجر شامی بچے کچڑے کے ڈھیر سے کھانا اکٹھا کر کے اپنا اور اپنے خاندان والوں کا پیٹ بھر رہے ہیں ۔لبنان ،اردن ،ترکی ور عراق میں 40 لاکھ سے زائد شامی ہجرت کرچکے ہیں ۔سنگین صورتحال پراقوام متحدہ کے کے کمشنر برائے مہاجرین اینٹونیو گٹرز نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے واشنگٹن پوسٹ کو انٹرویو میں کہا کہ گزشتہ چالیس برسوں میں ہونیوالی یہ سب سے بڑی ہجرت ہے۔ مہاجرین زندہ رہنے کی اس دوڑ میں اپنی زندگیاں کھو دیں گے۔ جیتنے کے لئے بہت سے میدان جنگ ہمارے سامنے ہیں لیکن بدقسمتی سے ہارنے والوں کی تعداد زیادہ ہے۔انہوں نے کہا کہ خواتین مہاجر اپنے کم سن بچوں کو گود میں اٹھائے پلوں کے نیچے،کھلے میدانوں میں ،دکانوں کے باہر اور سڑکوں کے چوکوںپربھوک سے نڈھال کھڑی نظر آتی ہیں ۔ بہت سے خاندان یورپ میں داخل ہونے کے لئے سمگلروں کو اپنی جمع پونجی دیکر بارڈر کراس کر رہے ہیں جس پر یورپ نے گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...