الطاف حسین کے مسلئے کا فوجی ایکشن کے ساتھ سیاسی حل بھی ضروری ہے، ٹیک کلب

الطاف حسین کے مسلئے کا فوجی ایکشن کے ساتھ سیاسی حل بھی ضروری ہے، ٹیک کلب

  

لاہور(فلم رپورٹر)پاکستان کی سالمیت اور بقاء کیلئے الطاف حسین کے مسئلے پر فوجی ایکشن کے ساتھ ساتھ سیاسی حل بھی فوری طور پر نکالنے کی اشد ضرورت ہے۔ پاکستان آرمی نے ایم کیو ایم کا خوف لوگوں کے دلوں سے نکالنے کیلئے بنیادی کردار ادا کیا ہے جسکا فائدہ یہ ہو گا کہ آئندہ عام انتخابات کے دوران عوام بلا خوف و خطر اپنے صحیح نمائندوں کو منتخب کریں گے۔ ہم الطاف حسین کی پاکستان کے خلاف بیان بازی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور انکے خلاف غداری کا مقدمہ چلانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار ٹیک سوسائٹی کلب میں پاکستان ویژنری فورم کے زیر اہتمام ہونیوالی 55 ویں کانفرنس کے دوران مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کیا جن میں سابق وفاقی وزیر قانون سینیٹر ایس ایم ظفر، سابق وزیر مملکت قیوم نظامی، زرعی سائنسدان ڈاکٹر محمد صادق، سابق آڈیٹر جنرل پنجاب جمیل بھٹی، سابق ڈی جی انٹیلی جنس بیورو میجر شبیر احمد، ڈاکٹر حسیب اللہ ، جمیل گشکوری، انجینئر عبدالمجید خان، محمودالرحمن چغتائی ، پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ، سلمان عابد، انجینئر محمد عظیم، یعقوب چودھری، خالد سلیم، ڈاکٹر اکرام کوشل اور میجر خالد نصر شامل تھے۔ مقررین نے کہا کہ سابق آمروں نے اپنے سیاسی مفادات کے تحت پیپلز پارٹی کا زور توڑنے کیلئے الطاف حسین کو مسلط کردیا جسکا خمیازہ آج پاکستان بھگت رہا ہے۔ سیاسی حکومتیں ہوں یا فوجی حکمران سب کو پاکستان کے مفادات کو ہر وقت مد نظر رکھنا چاہئے اور کوئی بھی ایسا قدم جسکا پاکستان کو کبھی مستقبل میں بھی کوئی نقصان ہو سکتا ہو اٹھانے سے گریز کرنا چاہئے ۔تمام سیاسی و عسکری قیادتوں کو ملک دشمن پالیسیوں سے ہمیشہ چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -