ایم کیو ایم پر پابندی کیلئے اسحاق ڈار کی سربراہی میں جائزہ کمیٹی قائم ، متحدہ کے نئے آئین کیلئے حتمی اجلاس آج ہو گا

ایم کیو ایم پر پابندی کیلئے اسحاق ڈار کی سربراہی میں جائزہ کمیٹی قائم ، ...

  

لاہور (سعید چودھری) وفاقی حکومت نے ایم کیو ایم پر پابندی لگانے کا جائزہ لینے کیلئے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی سربراہی میں اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دیدی ہے جس نے اپنا کام شروع کردیا ہے۔ اس 6 رکنی جائزہ کمیٹی کے دیگر ارکان میں اٹارنی جنرل پاکستان اشتر اوصاف علی، وزیر مملکت انوشہ رحمان، سابق اٹارنی جنرل سلمان بٹ، قانونی امور کے مشیر بیرسٹر ظفر اللہ خان اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی خواجہ ظہیر احمدشامل ہیں۔ کمیٹی ایم کیو ایم پر پابندی کے سیاسی اور آئینی پہلوؤں کا جائزہ لے گی۔ کمیٹی اس بابت بھی رپورٹ تیار کرے گی کہ ایم کیو ایم پر پابندی سے ملک پر کیا سیاسی اثرات مرتب ہوں گے اور یہ کہ کیا یہ واقعی کراچی کے عوام کی نمائندہ جماعت ہے۔ اس پر پابندی کا کیا ردعمل ہوگا؟ کمیٹی اس بات کا بھی جائزہ لے رہی ہے کہ الطاف حسین سے لاتعلقی کے اعلان کے بعد کیا اس جماعت کو ملک کی سالمیت اور حاکمیت اعلیٰ کیلئے خطرہ قرار دیا جاسکتا ہے؟ کیا ایم کیو ایم پر پابندی کا آئینی جواز موجود ہے؟ کمیٹی الطاف حسین کی اب تک تمام تقاریر اور ٹیلیفونک خطاب کا ریکارڈ اکٹھا کرے گی اور خطاب سننے والے افراد کے ان تقاریر پر ردعمل کا جائزہ لینے کیلئے ویڈیو ریکارڈنگ سے بھی مدد لے گی۔ حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ کمیٹی اپنی رپورٹ وزیراعظم کو پیش کرے گی۔ سرکاری ذرائع کے مطابق رپورٹ کی تیاری کیلئے لائحہ عمل مرتب کرلیا گیا ہے۔ اس بابت کمیٹی کے دو ابتدائی اجلاس بھی ہوچکے ہیں۔ کمیٹی اسی صورت میں ایم کیو ایم پر پابندی کی سفارش کرے گی جب اس بابت تمام آئینی تقاضے پورے ہوتے ہوئے نظر آئیں گے۔ آئین کے آرٹیکل 17 کے تحت کوئی سیاسی جماعت پاکستان کی سالمیت اور حاکمیت اعلیٰ کیلئے نقصان دہ اقدام کی مرتکب پائی جائے تو وفاقی حکومت اس پر پابندی کا ریفرنس سپریم کورٹ کو بھیج سکتی ہے۔ اعلیٰ سطحی کمیٹی ایم کیو ایم پر اس آئینی آرٹیکل کے نفاذ کے حوالے سے اپنی تجاویز دے گی۔

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ پاکستان نے نیا آئین تیار کرلیا ہے جس میں الطاف حسین کو مکمل طور پر پارٹی سے فارغ کردیا گیا ہے جبکہ نئے مسودے پر رہنما ؤں میں آج مشاورت ہوگی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پارٹی آئین میں تبدیلی کیلئے قانونی ماہرین سے مشاورت مکمل کرنے کے بعد مسودہ تیار کرلیا گیا ہے جبکہ ڈاکٹر فاروق ستار سمیت اہم عہدیداروں نے نئے آئین کی کاپیاں حاصل کرلی ہیں۔ آئین پڑھنے کے بعد رہنماؤں میں ترامیم کے حوالے سے مشاورت ہوگی ۔ ایم کیو ایم پاکستان کا ترمیم شدہ آئین کا مسودہ رواں ہفتے ہی الیکشن کمیشن میں جمع کرائے جانے کا امکان ہے۔ایم کیو ایم کی جانب سے نئے آئین میں الطاف حسین کاپارٹی سے تعلق مکمل طور پر ختم کردیا گیا ہے جبکہ لیٹر ہیڈ بھی تبدیل کیا جائے گا۔

نیا آئین

مزید :

صفحہ اول -