نوشہرہ ،اکوڑہ خٹک میں اندھے قتل کا ڈراپ سین

نوشہرہ ،اکوڑہ خٹک میں اندھے قتل کا ڈراپ سین

  

نوشہرہ(بیورورپورٹ) اکوڑہ اندھے قتل کیس کا 24گھنٹے سے بھی کم وقت میں ڈراپ سین ۔کہانی پیارکا شاخسانہ نکلی۔نوبیا ہتی دلہن کی فرمائش پر سفاک آشنا نے دلہا کو دوست کی مدد سے بلاکرفائر کرکے ابدی نیند سلا دیا ۔ پولیس نے تین ملزمان کو گرفتار کرکے آلہ قتل برآمد کرلیا تفصیلات کے مطابق مسمی اسلام الدین ولد معراج الدین سکنہ اکوڑہ نے تھانہ اکوڑہ خٹک پولیس کو رپورٹ درج کروائی کہ میرے بھائی ظاہر الدین کو کسی نامعلوم ملزمان نے فائر کر کے قتل کیا ہے ۔نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ۔اسی اثناء اہل علاقہ نے قاتلوں کی گرفتاری کے لیے جی ٹی روڈ بھی بند کیا تھا ۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے فوری طور اس واقعے کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے DSPاکوڑہ سرکل عدنان اعظم کی سربرائی میں SHOاکوڑہ انسپکٹر نہار علی ،SIحفیظ الرحمان ،SIاختر حسین پر مشتمل ٹیم تشکیل دیکر اصل حقائق سامنے لانے ،ملزمان کی گرفتاری ،آلہ قتل کی برآمدگی کو یقینی بنانے کا ٹاسک سونپا۔تفتیشی ٹیم نے اس اندھے قتل کیس کو چیلنج سمجھتے ہوئے جدید طریقہ تفتیش کو اپناتے ہوئے مقتول کی بیوہ صباون تک رسائی حاصل کی ۔مقتول کی بیوہ سے سرسری تفتیش کرنے پر تمام راز اگل دیئے۔مقتول کی بیوہ نے اعتراف جرم کرتے ہوئے کہا کہ میری کافی عرصہ سے مسمی مدثر ولد شیر زمان سکنہ شیوہ تالاب اکوڑہ کے ساتھ یاری اورناجائز تعلقات تھے۔چند یوم قبل میری مسمی ظاہر الدین کے ساتھ شادی ہوئی چونکہ مجھے تو پسند میرا محبوب تھا اور شوہر سے چھٹکارہ حاصل کرنے کی کی اپنے محبوب مدثرکے ساتھ مل کر منصوبہ بندی کرنے لگی۔مدثر کے دوست قیصر علی ولد اکبر علی کو بھی لالچ دیکر اپنے منصوبے میں شامل کیا کیونکہ میراشوہر اس کا دوست تھا ۔تفتیشی ٹیم نے دونوں ملزمان کو حراست میں لیا ۔سرسری تفتیش پر ملزمان نے اعتراف جرم کرتے ہوئے کہا مقتول میرا دوست تھا اس کو میں نے کسی بہانے اپنے پاس بلایااور اسی اثنا پہلے سے تاک میں مدثر نے 30بور پستول سے فائر کرکے قتل کیا ۔ملزمان کی نشاندہی پر آلہ قتل بھی برآمد کر لیا گیا ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -