مٹہ ،بہا جنگل میں درختوں کی غیر قانونی کٹائی پر عوام مشتعل

مٹہ ،بہا جنگل میں درختوں کی غیر قانونی کٹائی پر عوام مشتعل

  

مٹہ(نمائندہ پاکستان)مٹہ بہا جنگل کے غیر قانونی بے دریغ کھٹائی پر عوام سراپا احتجاج ،تفصیلات کیمطابق مٹہ کے علاقہ یونین کونسل بہا اوریونین کونسل فاضل بانڈہ کے عوام نے جنگل کے بے دریغ کھٹائی پر شدید احتجاج کیا ہیں ،کئے دیہاتو ں کے سینکڑوں عوام نے احتجاجی طور پر کہا ہیں کہ جنگل میں 40فیصد حصہ سرکار کا جبکہ 60فیصد حصہ قوم کا ہیں مگر جنگل کو محکمے اہلکاروں کے ایما پر بے دریغ اور غیر قانونی طور پر کھا ٹا گیا ہیں جو ناقابل برداشت ہے ،عوام کا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں ہم نے ڈے ایف او سوات سے لیکر کنزرویٹر تک کو اپنے تحفظات سے اگاہ کر دیا ہیں مگر تا حال کو ئی کاروائی نہیں کی گئی ،عوام کا کہنا تھا کہ کچھ دن پہلے کنزر ویٹر صاحب ائے ہوئے تھیں مگر بغیر کسی پوچھ گچھ کے اور کاروائی کئے بغیر چلے گئے،اسی طرح پٹرول سکواڈ والے بھی جائے وقوع میں انکوائری کیلئے ائے ہوئے تھیں مگر انہوں نے بھی اپنے افسران کا دیا ہو ا رپورٹ اگے پیش کیا ،اسی طر ح مقامی فارسٹر اور فارسٹ گارڈ کو صرف ایک دن کیلئے بر طرف کیا گیا تھا مگر پھر اسے بحال کیا گیا ،اس موقع پر گاوں کے بزرگ نے کہا کہ یہ فارسٹر پہلے یہاں پر موٹر سائیکل پر اتا تھا مگر اب ان کے پاس ایکس ایل ائی ہیں ،اسی طرح ہم نے کنزرویٹر صاحب کو کہا کہ اپ ایک کمپارٹ میں اگر ایک ہزار درختوں سے کم کھاٹے گئے تھیں تو ہم سرے سے احتجاج نہیں کرینگے لیکن اگر یہ کھاٹے ہوئے درخت ایک ہزار سے زائد تھیں تو پھر ملوث افراد کے خلاف کاروئی کر نی ہوگی،مگر کنزویٹر صاحب نے اس بات پر بھی کوئی دھیہان نہیں دیا ،عوام نے مجموعی طور پر مطالبہ کیا ہیں یہ 47کمپارٹوں پر مشتمل جنگل ہیں جس میں 60فیصد حصہ قوم کا ہیں اس معاملے میں کروڑوں نہیں اربوں روپے کی کرپشن ہوئی ہیں لہذا یہ معاملہ اب مقامی فسران کا نہیں رہا ،ہم وزیر اعلیٰ کے پی کے،چیر مین پی ٹی ائی کے چیر مین سے درخواست کرتے ہیں کہ معاملہ میں قومی ادارے نیب اور انٹی کرپشن سمیت محکمہ جنگلات کے افسران بالا واقع کے صحیح انکوئری کریں اور ملوث افراد کے خلاف کاروائی کریں ،اسی طرح جنگل کے ریالیٹی میں جس کا حصہ بنتا ہیں ان کو ان کا حق دیا جائے بصورت دیگر ہم شدید احتجاج کرینگے جس کی تما م تر زمہ داری محکمہ جنگلات اور حکومت وقت پر ہوگی،عوام نے کہا کہ صو بائی حکومت سو نامی پختونخواہ کے نام سے پودے لگانے کیلئے بہا میں پودے اور رقم دی ہیں مگر ابھی تک کہی بھی یہ پودے نہیں لگا ئے گئے لہذا اس کے بھی انکوئری کی جائے کے سو نامی والے پودے کہا پر لگائے گئے ہیں، عوام نے کہا کہ سو نامی سے پہلے ان بچے ہوئے جنگلات کو بچایا جائے ،اس موقع پرعلاقے کے مشران علی باچا،محمد کریم ،خائستہ خان ،شاہ کمین ،یوتھ کونسلر سیف اللہ،عبداللہ خان ودیگر نے میڈیا سے گفتگو کی۔۔۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -