ڈالر کی قدر میں اضافے سے درآمدکنندگان کو نقصان ہوگا: شازیہ سلیمان

ڈالر کی قدر میں اضافے سے درآمدکنندگان کو نقصان ہوگا: شازیہ سلیمان

لاہور (کامرس رپورٹر)ویمن چیمبر کی صدر شازیہ سلیمان نے اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی بڑھتی ہوئی قدراور پاکستانی روے کی قدر میں کمی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ سے جہاں درآمد کنندگان کو مالی نقصان کا سامنا کر نا پڑتا ہے وہیں ملکی معیشت پر بھی منفی اثرات رونما ہوتے ہیں ۔گزشتہ روز جاری کر دہ بیان میں ان کا کہناتھا کہ حکومت کی ناقص معاشی پالیسیوں کے تسلسل میں کاروبار حالات بحرانی کیفیت سے دوچار ہیں جبکہ ڈالر کی قیمتوں میں اضافہ سے بیرون ملک سے صنعتی مقاصد کیلئے منگوائے گئے خام مال کی قیمتوں میں اضافہ سے صنعتی شعبہ پر بوجھ پڑرہا ہے اور اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ سے ملکی برآمدات میں کمی سے تجارتی خسارہ بڑھتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ روپے کے مقابلہ میں ڈالر کی قدر میں ایک روپے اضافہ سے ملک میں قرضوں کے بوجھ میں57ارب روپے کا اضافہ ہوتا ہے۔شازیہ سلیمان نے کہا کہ ڈالر کی قیمت کو کنٹرول کرنے کے لئے سخت ترین اقدامات کئے جائیں اور اسے 100روپے تک لایا جائے کیونکہ ڈالر کی قیمت بڑھنے سے حکومتی قرضوں میں بھی اربوں روپے کااضافہ ہوجاتا ہے لہذا ایسے اقدامات کیے جائیں جن کے باعث ادائیگیوں میں تواز ن قائم ہو اور تجارتی خسارہ میں کمی ہو اس لیے حکومت ڈالر کی قیمت کو کنٹرول کرنے کیلئے مزید سخت اقدامات کرے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...