منظوری کے بغیرپیٹرولیم مصنوعات پر چالیس فیصد سیلز ٹیکس کے نفاذ کیخلاف دائر درخواست پر حکومت، اوگرا اور دیگر مدعاعلیہان سے جواب طلب

منظوری کے بغیرپیٹرولیم مصنوعات پر چالیس فیصد سیلز ٹیکس کے نفاذ کیخلاف دائر ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے وفاقی کابینہ کی منظوری کے بغیرپیٹرولیم مصنوعات پر چالیس فیصد سیلز ٹیکس کے نفاذ اور ناقص پیٹرول کی درآمد کے خلاف دائر درخواست پر وفاقی حکومت، اوگرا اور دیگر مدعاعلیہان سے جواب طلب کر لیاہے۔درخواست گزار جوڈیشل ایکٹوازم پینل کے سربراہ اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ وفاقی کابینہ کی منظوری کے بغیروفاقی وزارت پیٹرولیم کی جانب سے غیر قانونی طور پر پیٹرولیم مصنوعات پر 40فیصد سیلز ٹیکس وصول کر نے اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا انتظامی حکم جاری کیا گیا ہے، انہوں نے کہا کہ وزارت پیٹرولیم ملک میں ناقص پیٹرول برآمد کر کے اپنے ہی شہریوں کی جیبوں پر ڈاکہ ڈال رہی ہے۔سپریم کورٹ کے احکامات کے تحت وزارت پیٹرولیم کو،وفاقی کابینہ اور پارلیمنٹ کی منظوری کے بغیر پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافی سیلز ٹیکس عائد کرنے کا کوئی اختیار حاصل نہیں،انہوں نے استدعا کی کہ عدالت اضافی سیلز ٹیکس کے نفاذ کو کالعدم قرار دیتے ہوئے ناقص پیٹرول کی درآمد پر پابندی عائد کرنے کے احکامات صادر کرے، عدالت نے وفاقی حکومت اور وزارت پٹرولیم کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 22ستمبر تک ملتوی کر دی۔

مزید : علاقائی