یونین کونسل 182جلو موڑ ، صاف پانی نایاب ، ہڈیوں اور جگر کے امراض عام

یونین کونسل 182جلو موڑ ، صاف پانی نایاب ، ہڈیوں اور جگر کے امراض عام

لاہور( سروے رپورٹ: دیبا مرزا :تصاویر علی رضا) پاکستان اور انڈیا کے گیٹ وے کے سنگم میں واقع یو نین کو نسل 182 جلو موڑ ،ڈوگراں کلاں ، بھمبا ،جھگیا ں محمد بخش ،جھگیا ں درس،بھٹہ گا ؤں ، واڑان غلام حبیب اعوان ،بھلوانہ میں رہنے والی عوام کے لئے پینے کا پا نی نایا ب ہو گیا ،نو عمر بچے ، بچیا ں ہڈیو ں کی بیما ریو ں میں مبتلا ہو گئے ،ہپا ٹا ئٹس پھیلنے لگا ۔غریب دیہا تی لو گو ں پر مشتمل اس یو نین کو نسل میں ایک بھی فلٹریشن پلا نٹ موجو د نہیں ،چار ماہ پہلے لگا یا جا نے والا فلٹریشن پلا نٹ اب تک چالو نہ ہو سکا ، علا قہ مکین مسا ئل کا شکار ہیں ۔روزنامہ پاکستان کے زیر اہتمام گزشتہ روز یونین کونسل کے سروے کے دوران مزید انکشاف ہوا کہ مین جی ٹی روڈ با ٹا پو ر پرتجاوزات کی بھر مار جگہ بہ جگہ ریڑھی والوں اور چنگ چی رکشوں نے قبضے کر رکھے ہیں، گند گی کے ڈھیروں پر متعلقہ ٹاؤں انتظا میہ اور ٹی ایم او ز نے انکھیں بند کر رکھیں ہیں ،متعلقہ ونگ کما نڈر اور چیئر مین کی طرف سے کا فی دفعہ شکایت کر نے کے وجہ متعلقہ ادارے تعاون نہیں کرتے ۔روزنامہ پاکستان سے گفتگوکرتے ہوئے وحید با با ، اصغر، رشید، شہزاد، حمید نے بتا یا کہ علا قہ میں ویسے تو چیئر مین راشد کرا مت بٹ کا مکمل تعاون حا صل ہے اور چیئر مین اپنی استطا عت کے مطا بق ہما رے مسا ئل کو حل کروا تا ہے لیکن ہمارے ایم پی اے اور ایم این اے ہما رے ساتھ تعاون نہیں کر تے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے لئے پینے کا صاف پا نی تک دستیا ب نہیں جس کی وجہ سے بچوں میں ہڈیو ں کی بیما ریا ں پھیل رہی ہیں اور اس کے ساتھ ہپا ٹا ئٹس بھی پھیل رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پا نی کے مسئلہ کو سیا سی ایشو نہ بنا یا جا ئے اور فلٹریشن پلا نٹ کو فی الفور چا لو کیا جا ئے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1