پنجاب کا بینہ کا اجلاس ، قومی خدمات اور توانائی بحران کے خاتمے کی کاوشوں پر نواز شریف کو خراج تحسین کی قرار داد منظور

پنجاب کا بینہ کا اجلاس ، قومی خدمات اور توانائی بحران کے خاتمے کی کاوشوں پر ...

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی زیرصدارت صوبائی کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں سابق وزیراعظم محمد نوازشریف کی قومی خدمات کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا گیا۔ اجلاس میں سابق وزیراعظم محمد نوازشریف کی قومی خدمات ، معیشت کو مضبوط کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات اور توانائی بحران کے خاتمے کیلئے مخلصانہ کاوشوں کے حوالے سے اتفاق رائے سے قرارداد منظور کی گئی۔ پنجاب کابینہ کے اجلاس میں کہا گیا کہ سابق وزیراعظم محمد نوازشریف کا چار سالہ دور ملک کی تاریخ کا سنہرا دور ہے۔ محمد نوازشریف کے دور میں تیز رفتار ترقی کے نئے ریکارڈ قائم ہوئے ہیں اور عوام کو حقیقی معنوں میں ریلیف ملا ہے۔ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں پنجاب جنرل پراویڈنٹ انویسٹمنٹ فنڈ ایکٹ 2009 کے سیکشن 9-A کے تحت سرمایہ کاری کرنے کی منظوری دی گئی۔اس منظوری کے بعد پنجاب جنرل پراویڈنٹ انویسمنٹ فنڈ لانگ ٹرم سرمایہ کاری بھی کرسکے گا اور اس اقدام سے فنڈ کے حجم میں اضافہ ہوگا۔ اجلاس میں پرانی مرکزی جیل راولپنڈی سے ملحقہ اراضی وزارت دفاع کو دینے کی منظوری دی گئی۔ محمد نوازشریف زرعی یونیورسٹی ملتان کیلئے ضلع خانیوال میں ریسرچ کم تجرباتی فارم بنانے کیلئے اراضی دینے کی منظوری دی گئی۔ اجلاس میں الاٹیوں کو 7، 7 مرلے کے پلاٹ کے مالکانہ حقوق دینے کی تجویز کی منظوری کے ساتھ علاقے میں ڈویلپمنٹ کا کام کرنے کی منظوری دی گئی۔ کابینہ نے ضلع جھنگ میں پنجاب حکومت کی جانب سے 1200 میگاواٹ کے نئے گیس پاور پراجیکٹ کیلئے اراضی کی منتقلی کی منظوری دی گئی۔ نیشنل کاؤنٹر ٹیررازم سینٹر پبی کیلئے زمین دینے کی منظوری بھی دی گئی جبکہ لاہور رنگ روڈ اتھارٹی اور ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی کے مابین لاہور رنگ روڈ سدرن لوپ کی اراضی کے تبادلے کے حوالے سے معاہدے کی توثیق کی گئی۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے صوبائی کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لوڈشیڈنگ میں نمایاں کمی کا کریڈٹ سابق وزیراعظم پاکستان محمد نوازشریف کی شب و روز کی محنت کو جاتا ہے۔ محمد نوازشریف کی قیادت میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے گزشتہ چار سال کے دوران توانائی بحران کے خاتمے کیلئے دن رات ایک کئے رکھا۔ گیس کی بنیاد پر پنجاب میں 3600 میگاواٹ کے 3 پراجیکٹس لگانے کا فیصلہ محمد نوازشریف کا جرأت مندانہ اقدام ہے اور ان منصوبوں سے جہاں لوڈشیڈنگ میں نمایاں کمی ہوئی ہے، وہاں صارفین کو بھی بجلی سستی مل رہی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ گیس کی بنیاد پر لگنے والے یہ منصوبے 20، 20 ماہ کی ریکارڈ مدت میں مکمل کئے گئے ہیں اور اتنی تیز رفتاری سے گیس کی بنیاد پر لگنے والے منصوبوں کی تکمیل دنیا کی تاریخ میں کوئی اور مثال موجود نہیں۔ انہوں نے کہا کہ سابق وزیراعظم محمد نوازشریف کی کاوشوں کا نتیجہ ہے کہ ملک سے توانائی بحران ختم ہونے کو ہے اور آئندہ سال عام انتخابات سے قبل ملک سے لوڈشیڈنگ کا خاتمہ ہو جائے گااوراس کی جانب ہم تیزی سے بڑھ ر ہے ہیں۔لوڈ شیڈنگ کے اژدھے کا سر بڑی حد تک کچل دیا ہے ۔ اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم اور شب روز کی محنت کی بدولت ہم عوام کی عدالت میں سرخرو ہوں گے۔ 2013 کے عام انتخابات میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کی قیادت نے عوام سے لوڈشیڈنگ کے خاتمے کا جو وعدہ کیا تھا وہ پورا ہونے کو ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ پاکستان ایک آزاد اورخود مختار ملک ہے اورقائداعظم محمد علی جناحؒ کی قیادت میں یہ ملک اسی بنیاد پر حاصل کیاگیا تھا۔میں نے 2010ء میں ایسی امداد لینے سے انکار کیا تھا جس سے ہماری عزت نفس مجروح ہوتی ہواورپنجاب حکومت نے2010ء سے آج تک ایسی امداد نہیں لی،تاہم تعلیم ،صحت اور سماجی شعبوں کی بہتری کیلئے دوست ممالک کے تعاون کی قدر کرتے ہیں ۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب کو ڈینگی کی شدید وباء کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ پنجاب حکومت کے تمام اداروں، سیاسی رفقاء، انتظامیہ اور سب لوگوں کی مشترکہ کاوشوں سے ہم اس وباء پر قابو پانے میں کامیاب ہوئے۔جب پنجاب میں یہ وباء آئی تو ہمیں اس کے بارے میں کوئی علم نہ تھا۔ ہم محنت سے کام کرتے ہوئے ڈینگی وباء کو پنجاب سے ختم کرنے میں کامیاب ہوئے اور اسی تجربے کی روشنی اور خیرسگالی کے جذبات کے طور پر پنجاب حکومت کے ماہرین نے پشاور میں ڈینگی سے نمٹنے کیلئے اپنا تعاون فراہم کیا۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی وزیر صحت خواجہ عمران نذیر کی سربراہی میں پنجاب سے جانے والی ماہرین کی ٹیم نے شاندار کام کیا۔ میں اور پوری کابینہ پشاور میں ڈینگی کی وباء سے نمٹنے کیلئے شاندار کام کرنے پر شاباش دیتے ہیں۔ پنجاب کابینہ کے اجلاس میں پشاور میں شاندار خدمات سرانجام دینے پر صوبائی وزیر خواجہ عمران نذیر، سیکرٹری صحت اور پوری ٹیم کی کارکردگی کی تعریف کی گئی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ ’’خادم پنجاب دیہی روڈز پروگرام‘‘ کے تحت کھیتوں سے منڈیوں تک سڑکوں کی تعمیر تاریخ کا ایک اعلیٰ شاہکار ہے۔دیہی سڑکو ں کی تعمیر و بحالی نے دیہی زندگی میں انقلاب برپا کر دیا ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ میری درد دل سے استدعا ہے کہ صوبائی وزراء اور تمام ادارے عوام کی خدمت میں دن رات ایک کردیں کیونکہ مٹی سے مٹی ہو کر اور خون پسینہ بہا کر ہی کامیابی ملتی ہے، لہٰذا مقاصد اور اہداف کے حصول کیلئے تمام محکمے اور ادارے پوری طرح متحرک ہو کر کام کریں۔ کابینہ کے اجلاس میں صوبائی وزیر ملک ندیم کامران کی والدہ اورسیکرٹری ہاؤسنگ کے سسر کے انتقال پرفاتحہ خوانی کی گئی۔صوبائی وزراء، معاونین خصوصی، مشیران، چیف سیکرٹری اور اعلیٰ حکام نے کابینہ کے اجلاس میں شرکت کی۔

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں شہید ہونے والے قوم کے ہیروہیں اورپوری قوم ان شہداء کی قربانیوں کو سلام پیش کرتی ہے۔انشاء اللہ شہداء کا خون رائیگاں نہیں جائے گااوران کی قربانیوں کے باعث پاکستان میں امن قائم ہوگااورملک ترقی و خوشحالی کا سفر کامیابی سے طے کرے گا۔پاک افواج ،پولیس اورسکیورٹی اداروں کے افسران و جوان جرأت اوربہادری سے دہشت گردوں کا مقابلہ کررہے ہیں ۔دہشت گردوں نے بے گناہ لوگوں کا خون بہایاہے اوروہ وقت آئے گا جب ان شہداء کا خون رنگ لائے گااور پاکستان امن کا گہوارہ بنے گا۔ہمیں باہمی خلفشار اورباہمی اختلافات کو ختم کر کے دہشت گردی کے خلاف ملکر آگے بڑھنا ہے اور دہشت گردی و انتہاء پسندی کے خاتمے کے اہداف ہر قیمت پر حاصل کرنا ہیں۔ ہمیں ایک دوسرے کو نشانہ بنانے کی بجائے پوری قوت کے ساتھ دہشت گردوں کے خلاف لڑنا ہے اوروطن عزیز سے دہشت گردی و انتہاء پسندی کا خاتمہ کرنا ہے کیونکہ دہشت گردی کے عفریت کو ختم کیے بغیر پاکستان ترقی وخوشحالی کا سفر طے نہیں کرسکتا۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے ان خیالات کا اظہار آج یہاں ماڈل ٹاؤن میں کوٹ لکھپت سبزی منڈی کے بم دھماکے میں شہید ہونے والے پولیس اہلکاروں کے لواحقین میں مالی امداد کے چیک تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔وزیراعلیٰ نے پولیس شہداء کے لواحقین سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ آپ ایسے گھرانوں کے عظیم لوگ ہیں جن کے پیاروں نے وطن عزیز کے امن کیلئے اپنی جانوں کی قربانی دی اور اپنے لہو کا نذرانہ پیش کیا ،قوم کو آپ پر فخر ہے ۔انہوں نے کہا کہ آپ کے پیاروں نے پاکستان کے امن کے لئے جام شہادت نوش کیا ہے ، اس کا اجراللہ تعالیٰ دے گا،تاہم دنیا کے اندھے تھپیڑوں کا مقابلہ کرنے کیلئے پنجاب حکومت بھی آپ سے تعاون کی ذمہ داری نبھائے گی۔مالی امداد کسی جان کی کوئی قیمت نہیں ہے اورنہ ہی یہ اس کی تلافی کرسکتی ہے جو آپ کے پیاروں نے قربانی دی ہے ۔دنیاوی تقاضے پورے کرنے ہیں اورآپ کے بچوں نے تعلیم حاصل کر کے اس ملک و قوم کی خدمت کرنا ہے اور اس حوالے سے آپ کی ضروریات پوری کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے اورہم یہ ذمہ داری نبھائیں گے۔انہوں نے کہاکہ شہداء پیکیج کے مطابق شہید سب انسپکٹر اور اسسٹنٹ سب انسپکٹرکو 1کروڑ 25لاکھ اورشہیدکانسٹیبل 1کروڑ روپے نقد دےئے جارہے ہیں جبکہ شہید سب انسپکٹر کو 7مرلے کا گھرجس کی قیمت1کروڑ 75لاکھ روپے ہے اورشہید کانسٹیبل کو 5مرلے کا گھر دیا جارہا ہے جس کی قیمت 1کروڑ 35لاکھ روپے ہے۔شہداء کے بچوں کی تعلیم اورعلاج معالجہ مفت ہوگا، شہداء کے بچے جب تک تعلیم حاصل کرنا چاہیں گے ۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کوٹ لکھپت سبزی منڈی کے پولیس شہداء کے لواحقین میں چیک تقسیم کیے ۔اس موقع پر شہداء کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی۔صوبائی وزراء کرنل (ر) ایوب گادھی ، جہانگیر خانزادہ ، ترجمان پنجاب حکومت ملک احمد خان، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، انسپکٹر جنرل پولیس اور متعلقہ حکام اس موقع پر موجود تھے۔دریں اثناء شہباز شریف نے کہا ہے کہ ہیلتھ کیئر سسٹم میں بہتری کیلئے انقلابی نوعیت کی اصلاحات کے اچھے نتائج برآمد ہوئے ہیں ۔عوام کو جدیداور معیاری طبی سہولتوں کی فراہمی کے مشن کو ہر قیمت پر پورا کروں گا ۔سرکاری ہسپتالوں میں طبی سہولتوں کے معیار کو بہتربنانے تک چین سے نہیں بیٹھوں گا ۔شعبہ صحت کی بہتری کیلئے مقررکئے گئے اہداف کے حصول کیلئے جان لڑا دیں ۔وزیر اعلیٰ نے ٹیچنگ ہسپتالوں کی مینجمنٹ کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے پلان کی منظوری دیتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام کا آغاز پائلٹ پراجیکٹ سے ہوگا۔ٹیچنگ ہسپتالوں میں مزید وینٹی لیٹر ز کی خریداری کے پروگرام کی منظوری دیتے ہوئے ہدایت کی کہ ہسپتالوں میں وینٹی لیٹر ز کی خریداری کا عمل جلد شروع کیا جائے۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے یہ بات ویڈیولنک کے ذریعے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی، تین گھنٹے تک جاری رہنے والے اجلاس میں صحت کے شعبہ میں اصلاحات اور ہیلتھ پراجیکٹس پرپیشرفت کا تفصیلی جائزہ لیاگیااور سرکاری ہسپتالوں میں غیر ملکی سپیشلسٹ لانے کیلئے مجوزہ مراعاتی پیکیج کا بھی جائزہ لیا گیا۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ عوام کو بہتر سے بہتر علاج معالجہ کی سہولتوں کی فراہمی کے پیش نظر اس مراعاتی پیکیج کوجلد حتمی شکل دی جائے اورسپیشلسٹ و باصلاحیت ہیومن ریسورس کے حصول کیلئے روڈشوز کا انعقاد کیا جائے۔اجلاس میں پنجاب میں ادویات کی سپلائی چین کیلئے میڈیکل سٹورز کے قیام کے منصوبے کی بھی منظوری دی گئی۔وزیراعلیٰ نے منصوبے پر تیز رفتاری سے عمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ صوبے بھر میں جاری ہیلتھ پراجیکٹ کو تیزی سے مکمل کرنے کیلئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب میں آئندہ نئے ہسپتال پبلک پرائیویٹ پارنٹر شپ کے تحت بنائے جائیں گے اورماڈل بن چکا ہے اسے ہر جگہ لاگو کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم ہیلتھ انشورنس سکیم پنجاب کے چار اضلاع میں کامیابی سے جاری ہے اور چار اضلاع میں جاری ہیلتھ انشورنش سکیم کی تھرڈ پارٹی ویلیڈیشن کرائی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کے تمام اضلاع تک اس پروگرام کا دائرہ بڑھانے کیلئے تیز رفتاری سے اقدامات کئے جائیں۔ہیلتھ انشورنس سکیم کے تحت غریب ترین گھرانوں کو سرکاری اور نجی ہسپتالوں میں معیاری علاج معالجہ مفت فراہم کیا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت صوبائی دارالحکومت میں اربوں روپے کی لاگت سے سٹیٹ آف دی آرٹ پاکستان کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ بنا رہی ہے ۔اس ادارے میں گردے اور جگر کے امراض میں مبتلا مریضوں کا علاج مفت ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام کو موثر انداز سے آگے بڑھایا جا رہا ہے اور صوبے بھر میں جدید ہیپاٹائٹس فلٹر کلینکس بنائے جا رہے ہیں ۔ان فلٹر کلینکس پر ہڑتال نہیں ہو گی بلکہ مریضوں کا علاج ہو گا۔ پنجاب میں ہیپاٹائٹس فلٹر کلینکس کا قیام دکھی انسانیت کی بہت بڑی خدمت ہے اور ہیپاٹائٹس کے مریضوں کو ٹی سی ایس کے ذریعے ادویات ان کے گھروں پر فراہم کی جا رہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہسپتالوں میں جینیٹوریل سروسز کو آؤٹ سورس کیا گیا ہے اورجینیٹوریل سروسز کے معیار کو مزید بہتر بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ گورنمنٹ رجب طیب اردوان ہسپتال مظفر گڑھ کے توسیع منصوبے پر کام کی رفتار مزید تیز کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ڈرگ ٹیسٹنگ لیب کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کیا گیا ہے اورصوبے سے جعلی اور غیر معیار ی ادویات کے کاروبار کو مکمل طور پر ختم کر کے دم لیں گے ۔انہوں نے کہا کہ دیہی علاقوں میں شروع کی گئی خادم اعلی ایمبولینس سروس سے دیہی خواتین کو بڑی سہولت ملی ہے۔ہسپتالوں کے ویسٹ مینجمنٹ کیلئے انسینریٹر ز کی تنصیب کے پروگرام پر بھی تیزی سے کام کیا جائے۔انہوں نے کہاکہ پوسٹ گریجوایٹ ٹریننگ پروگرام کو بہتربنایا گیا ہے ۔اس پروگرام کا آغاز پائلٹ پراجیکٹ کے طور پر کیا جائے گا ۔صوبائی وزراء خواجہ سلمان رفیق ، خواجہ عمران نذیر ، مختار بھرت ، مشیر ڈاکٹر عمر سیف، چیف سیکرٹری، ایڈیشنل چیف سیکرٹری، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹریز صحت اور متعلقہ حکام نے سول سیکرٹریٹ سے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی۔

وزیراعلیٰ پنجاب

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...