مردم شماری کے دھاندلی زدہ نتائج کو مسترد کرتے ہیں: فاروق ستار

مردم شماری کے دھاندلی زدہ نتائج کو مسترد کرتے ہیں: فاروق ستار

کراچی(اسٹاف رپورٹر)متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم)پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے کہاہے کہ 2017کی مردم شماری کے جبری اور دھاندلی زدہ نتائج مسترد کرتے ہیں۔ کراچی اور حیدر آباد کو بلدیاتی حقوق ملیں گے نہ روزگار ملے گا، کراچی کے ساتھ زیادتی پاکستان کے ساتھ زیادتی ہے۔ یہ صرف ایم کیو ایم کا نہیں سندھ میں رہنے والے تمام قوموں کا مسئلہ ہے ، کراچی پاکستان کی ترقی کا انجن ہے۔ سندھ کی شہری آبادی کو جان بوجھ کر کم ظاہر کیا گیا ہے، ماضی کی مردم شماریوں میں بھی یہی ہوا تھا۔منگل کو یہاں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ نے کہا کہ سندھ میں آباد لوگوں سے کہا جارہا ہے وہ تیسرے درجے کے شہری ہیں، یہاں کے عوام کومعاشی حقوق سے محروم کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہاکہ سندھ کی شہری آبادی کے استحصال کا نیا سلسلہ شروع کیا گیا ہے ۔2017 کی مردم شماری میں ناانصافی اور دھاندلی کی گئی ہے ،اس مردم شماری کے جبری نتائج کسی حال میں قبول نہیں کریں گے،اس بار مردم شماری کے ذریعے ہمیں دیوار سے لگایا نہیں گیا بلکہ دیوار میں چنوا دیا گیاہے۔انہوں نے کہاکہ اس سے بڑا ظلم پاکستان میں پہلے کبھی نہیں ہوا، سپریم کورٹ آف پاکستان سے کہیں گے کہ ہماری آبادی کا مقصد ہماری تعداد کو گھٹانا ہے۔ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ کراچی کی آبادی میں کمی لاہور، پشاور، کوئٹہ سمیت پورے پاکستان کے شہریوں کا بھی مسئلہ ہے، شہر کی آبادی کم دکھاکر پاکستان کی ترقی کے انجن کا بھٹا بھٹانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے، مردم شماری میں بدترین نا انصافی کرکے سندھ کی عوام کو ان کی حیثیت یاد دلائی گئی۔ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ نے مزید کہا کہ سندھ کی شہری آبادی کو زبردستی کم گنا گیا، اب صرف اردو بولنے والے سے نہیں بلکہ سندھ کے شہر میں بسنے والے سندھی، گلگتی، بلتستانی سے کہا جارہا ہے کہ آپ تیسرے درجے کے شہری ہیں۔ڈاکٹرفاروق ستار نے کہاکہ حلقہ بندیوں میں بھی آبادی کے تناسب کا عمل دخل ہوتا ہے ،فاٹا سمیت ہر علاقے سے لوگ کراچی آتے ہیں،نتائج میں کراچی اور ملک کی آبادی میں 60 فیصد اضافہ ظاہر کیاگیا۔

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...