پنجاب حکومت دینی مدارس کیخلاف مہم جوئی میں مصروف ہے‘ مولانا زبیر احمد

پنجاب حکومت دینی مدارس کیخلاف مہم جوئی میں مصروف ہے‘ مولانا زبیر احمد

ملتان(جنرل رپورٹر) عیدالاضحی پر دینی مدارس و جامعات کو قربانی کی کھالیں (بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

جمع کرنے کی اجازت نہ دے کر حکومت پنجاب وعدہ خلافی کا ارتکاب کر رہی ہے، حکومت بتائے کہ عوام مدارس کو قربانی کی کھالیں نہ دیں تو کیا ملک کے خلاف سازشیں کرنے والی این جی اوز کو دیں!مسلم لیگ کا سیکولر ازم کا ایجنڈا کبھی پورا نہیں ہوگا، حکومتی پابندیوں کو مسترد کرتے ہیں، ان خیالات کا اظہار وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے ناظمِ پنجاب مولانا زبیر احمد صدیقی اور وفاق المدارس کے اراکین مجلس عاملہ مولانا ارشاد احمد، مولانا ظفر احمد قاسم اور ضلعی مسؤلین مفتی محمد مظہر شاہ اسعدی، مولانا عبدالمجید، مولانا محمد عمر قریشی، مولانا محمد نواز، مولانا حبیب الرحمن مدنی، مولانا معین الدین وٹو، مفتی خالد محمود، مولانا رشید احمد شاہ جمالی، مولانا کلیم اللہ، مولانا صفی اللہ، مفتی محمد زبیر اور مفتی خرم یوسف نے اپنے مشترکہ بیان میں کیا، انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت ایک عرصے سے علماء و مشائخ اور دینی مدارس کے خلاف مہم جوئی میں مصروف ہے، غیر ملکی آقاؤں کی خوشنودی کے لیے نصاب تک کو بدلا جا رہاہے، گزشتہ دوسالوں سے مدارس کے معاشی وسائل کے انسداد کے لیے غیر آئینی پابندیاں لگائی جارہی ہیں،انہوں نے کہ 16اگست کی وزیر اعلی کے ساتھ میٹنگ میں وزیر اعلی اور ان کی کیبنٹ نے اتحاد تنظیمات مدارس اور مولانا فضل الرحمن سے وعدہ کیا تھا کہ مدارس کو قربانی کی کھالوں کی اجازت دے دی جائے گی اور گزشتہ دو سالوں کی طرح مدارس کو پریشان نہیں کیا جائے گا، اس وعدے کے باوجود اکثر اضلاع میں تاحال اجازت نامے روکے ہوئے ہیں علماء ومشائخ کو دفتروں کے چکر لگوائے جارہے ہیں، ضلع خانیوال میں 180مدارس، ضلع بہاولنگر میں 129 اور ضلع بہاولپور میں 28مدارس کی درخواستوں کو مسترد کردیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ پنجاب اور مسلم لیگ کی حکومت قرآن پڑھنے والے معصوم بچوں کا نوالہ چھین کر بددعائیں لے رہی ہے، انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت اپنی روش سے باز نہ آئی تو عید کے بعد مذہبی طبقات پنجاب حکومت کے خلاف بھر پور تحریک چلائیں گے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر