بیمار شخص کی زمین کو شر پسند عناصر نے جعل سازی سے ایوارڈ کردیا

بیمار شخص کی زمین کو شر پسند عناصر نے جعل سازی سے ایوارڈ کردیا

مظفرآباد(بیورورپورٹ)کینسر کے مرض میں مبتلاء شخص کی زمین کو شر پسند عناصر نے جعل سازی سے ایوارڈ کردیا ۔دھمکیاں دی جانے لگیں۔ متاثرہ خاندان داد رسی کیلئے مرکزی ایوان صحافت پہنچ گیا۔صدر‘ وزیراعظم ‘ چیف جسٹس ‘ چیف سیکرٹری ‘ آئی جی پولیس سے نوٹس لینے کا مطالبہ ‘خود سوزی کی دھمکی۔ لوات بالا کی رہائشی خاتون بیگم نور زوجہ طواسین نے پوتے اور پوتیوں کے ہمراہ صحافیوں کو بتایا کہ ان کے خاوند طواسین ولد طوطا گزشتہ 12سال سے کینسر کے مرض میں مبتلاء ہیں جو کراچی کے ایک ہسپتا ل میں زیر علاج ہیں۔ ہم ان کا علاج کرانے کیلئے کراچی گئے توہماری غیر موجودگی کا فائد ہ اٹھاتے ہوئے ڈائریکٹر پلاننگ مقبول عباسی ‘ علاقے کے مفاد پرستوں خواجہ غلام حیدر ‘ خواجہ اسرائیل ‘ خواجہ ثناء اللہ اور دیگر ہماری4کنال سے زائد زمین گرلز ہائی سکول لوات کو ایوارڈ کردی ۔ جب ہمیں علم ہو ا تو ہم نے دیگر کوششوں کیساتھ ساتھ معاملہ شاہ غلام قادر کے نوٹس میں بھی لایا مگر کوئی شنوائی نہ ہوئی ۔ میرے 4شادی شدہ بیٹے ہیں پوتے اور پوتیوں سمیت خاندان کے 27افراد ہیں۔ ہمارے پاس اب رہنے کو کوئی جگہ نہیں ہے۔ سکول کا ہیڈ ماسٹر بھی جان سے مارنے کی دھمکیاں دیتا ہے۔ انہوں نے صدر‘ وزیراعظم ‘ چیف جسٹس ‘ چیف سیکرٹری ‘ آئی جی پولیس سے مطالبہ کیا ہے کہ ان کی زمین واگزار کرائی جائے اور جان کا تحفظ یقینی بنایا جائے۔ اگر انصاف نہ ملا تو وزیراعظم ہاؤس کے سامنے پورے خاندان سمیت خود سوزی کرینگے جس کی ذمہ داری حکومت پر ہوگی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر