میٹروبس منصوبے میں کرپشن کا الزام ،اگر 48گھنٹوں میں اے آ روائی نیوز ثبوت لے آئے تو عوام میری گردن زنی کردے :شہباز شریف

میٹروبس منصوبے میں کرپشن کا الزام ،اگر 48گھنٹوں میں اے آ روائی نیوز ثبوت لے ...
میٹروبس منصوبے میں کرپشن کا الزام ،اگر 48گھنٹوں میں اے آ روائی نیوز ثبوت لے آئے تو عوام میری گردن زنی کردے :شہباز شریف

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے نجی نیوز چینل اے آر وائے نیوز کی جانب سے میٹرو بس منصوبے میں 3ارب روپے کی کمیشن کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر 48گھنٹوں میں اے آر وائی نیوز ثبوت لے آئے تو عوام میری گردن زنی کردے ، 1997سے لے کر اب تک ایک دھیلے کی کرپشن بھی ثابت ہو جائے تو میرا گریبان اور قوم کا ہاتھ ہو گا ،اگر میرے مرنے کے بعد بھی کوئی کرپشن کا ثبوت ملے تو میری قبر سے پیسے کا حساب لی جائے ۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئےوزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کا کہنا تھا کہ نجی ٹی وی  اے آر وائے نیوز کی جانب سے بے بنیاد اور جھوٹے الزامات لگائے گئے ،مذکورہ چینل کے اینکرز پرسن ارشد شریف ،سمیع ابراہیم اور عارف حمید بھٹی نے الزامات لگائے جنہیں میں نے نظر انداز کیا مگر اس کے بعد دیگر چینلز نے بھی اس ایشو پر غلط رپورٹنگ کی تو میں نے مناسب سمجھا کہ میڈ یا پر آکر بات کروں ۔ چینی کمپنی یابیٹ نے دعویٰ کیا کہ اس نے پاکستان میں کیپیٹل انجینئرنگ اینڈ کنسٹریکشن کمپنی پرائیویٹ لمیٹڈ کے ساتھ مل کر کام کیا ،اس کو ملتا ن کے میٹرو بس میں براہ راست کام دیا گیا ۔ہم نے تحقیق کی تو پتہ چلا کہ کیپیٹل انجینئرزاینڈ کنسٹریکشن کمپنی پاکستان میں موجود ہی نہیں ۔اس کے بعد جب ملتان میٹرو بس منصوبے میں کام کرنے والے 9کنٹریکٹرز سے اس کمپنی کے بارے میں پتہ کیا گیا تو سب نے لکھ کر دیا کہ انہوں نے اس کمپنی سے کام نہیں کیا ۔وزیر اعلیٰ پنجاب نے کہا کہ اے آر وائی نیوز نے الزام لگا یا کہ حکومت پنجاب ایس ای سی پی کو کوئی خط نہیں لکھا ۔پنجاب حکومت کو  ایس ای سی پی کی جانب سے پہلا خط 13فروری کو ملا جس پر مکمل تحقیق کر کے 13مارچ کو جواب دے دیا گیا ۔نجی ٹی وی چینل کی جانب سے مجھ پر الزام لگایا گیا کہ  وزیر اعلیٰ پنجاب نے یابیٹ کی تعریف میں سر ٹیفکیٹ دیا جو شہباز شریف نے سائن کیا ،یہ سارا خط کیپٹل ورڈز میں تھا اور میں نے آج تک کیپٹل ورڈز میں سرکاری خط نہیں لکھا ۔

مزید خبریں :روس پاکستان کو 4 ایم آئی 35 گن شپ ہیلی کاپٹر فراہم کر دیئے

مزید : قومی /اہم خبریں

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...