مظفرآباد،اغواء کیس،پولیس ملزمان کی پشت پناہی کرنے لگی

مظفرآباد،اغواء کیس،پولیس ملزمان کی پشت پناہی کرنے لگی

مظفرآباد (بیورورپورٹ) ڈیڑھ ماہ قبل 39 سالہ شخص کے ہاتھوں 15 سالہ بچی کا اغوا، پولیس اے ایس آئی ملزمان کا پشت پناہ، متاثرہ خاندان کا دشمن بن گیا، ہمیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دی جارہی ہیں، ریاست کے اعلیٰ حکام میری نابالغ بچی کوبازیاب کراتے ہوئے مجھ جانی ومالی تحفظ فراہم کریں، ان خیالات کااظہار سنی کوٹ گڑھی دوپٹہ کے رہائشی غلام نبی نے گزشتہ روز میڈیا کو تفصیلات بتاتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ میری نابالغ بچی مسماۃ (ز) کو 17 جولائی کو جاوید ولد شکردین نے اغوا کیا جبکہ میری بچی کی عمر 15 سال ہے اور اغوا کار جاوید کی عمر 39 سال ہے، جاوید نے علاقہ پاکستان میں جا کر میری بچی کی عمر20 سال لکھوا کر نکاح کروایا ہے، جو بھی جھوٹ ہے، جاوید کی پشت پناہی سنی کوٹ کا رہائشی عبدالخالق کررہا ہے جو پولیس میں اے ایس آئی ہے اور تھانہ صدر مظفرآباد میں تعینات ہے، موبائل ڈیٹا کے ذریعہ بھی عبدالخالق کی پشت پناہی ثابت ہوچکی ہے، اب عبدالخالق ہمیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہا ہے کہ عدالت کیوں گے ہو، مختلف ذرائع سے انصاف کیوں مانگ رہے ہو، خاموش ہوکر گھر بیٹھ جاو ورنہ نشان عبرت بنادونگا، جس سے ہمیں جان ومال کا خطرہ لاحق ہوچکا ہے، میں وزیراعظم آزادکشمیر، چیف سیکرٹری، آئی جی پولیس سے اپیل کرتا ہوں کہ میری نابالغ بچی بازیاب کرائی جائے اور مجھے جاوید اورعبدالخالق اور ان کے ہمراہی ملزمان سے جان ومال کا تحفظ فراہم کیا جائے۔

مزید : کراچی صفحہ آخر