حکومت کا جہلم پل سے پہلے ہی تحریک لبیک کی ریلی روکنے کا فیصلہ، کنٹینر لگانا شروع کردیئے

30 اگست 2018 (10:36)

گجرات (مرزا نعیم سے) تحریک لیبک کے مرکزی راہنما مہر محمد افضل قادری نے کہا ہے کہ عمران خان اگر اسلام آباد میں 126یوم کا دھرنا دیں جس میں عریانی وفحاشی کو فروغ دیا گیا تو وہ جائز ہے، اگرتحریک لبیک ناموس رسالت کے لئے دھرنا دیاا تو وہ ناجائز ہوجاتا ہے۔ یہ مارچ پر امن ہے اور آئین میں پر امن احتجاج کی گنجائش ہے۔ذرائع کے مطابق تحریک لبیک کوجہلم پل سے پہلے ہی روکنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور کنٹینرز لگا کر جی ٹی روڈ کو بند کرنے کا سلسلہ شرو ع کر دیا گیا جبکہ مختلف اضلاع سے بھاری پولیس کھاریاں اور سرائے عالمگیری پہنچ گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ جو بھی ہمارا مارچ روکے گا وہ یہود ہنود کا ساتھی ہوگا، ہم دو گھنٹے کے اندر اندر پورا ملک جام کردیں گے۔ کراچی سے خیبر اور آزاد کشمیر میں تاریخی پہیہ جام ہوگا۔ حکمران فیض آباد اور داتادربار کے دھرنے کوفراموش نہ کریں جب تک ہالینڈ کے سفیر کو ملک بدر نہیں کیا جاتا ہم پیچھے ہٹنے والے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مذمت سے کام نہیں چلے گا ، ہم کسی وزیر مشیر سے مذاکرات نہیں کریں گے۔ ہمیں آفرکی گئیں مگر ہم نے انہیں مسترد کر دیا۔ حکمران ہمیں بتائیں کہ ہالینڈ کے سفیر کو کیوں ملک بدر نہیں کیا جا رہا۔ یو ۔ این ۔ او اور او ۔ این ۔آئی مغلوج ادارے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مارچ امت مسلمہ میں بیداری پیدا کرنے کے لیے ہے۔ علاوہ ازیں تحریک لبیک کی ہزاروں افراد پر مشتمل ریلی سحری 3 بجے مراڑیاں شریف پہنچی۔ جہاں قافلے کے شرکاء نے آرام کیا اور صبح ناشتے کے بعد 9بجے اسلام آباد کی طرف رواں دواں ہوگیا۔

مزیدخبریں