انجینئرنگ یونیورسٹی کے ڈائریکٹر آئی بی ایم ڈاکٹرشعیب کو بدعنوانی کی بنیاد پر عہدے سے ہٹادیا گیا 

انجینئرنگ یونیورسٹی کے ڈائریکٹر آئی بی ایم ڈاکٹرشعیب کو بدعنوانی کی بنیاد ...
انجینئرنگ یونیورسٹی کے ڈائریکٹر آئی بی ایم ڈاکٹرشعیب کو بدعنوانی کی بنیاد پر عہدے سے ہٹادیا گیا 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وائس چانسلر یوای ٹی ڈاکٹر سید منصور سرور نے آئی بی ایم ڈیپارٹمنٹ  کے ڈائریکٹرڈاکٹر محمد شعیب کو بدعنوانی کی بنیاد پر عہدے سے ہٹاتے ہوئےانہیں ان کے اصل ڈیپارٹمنٹ کمپیوٹر سائنس میں رپورٹ کرنے کا حکم دیا ہے،ماضی میں بھی ڈاکٹر محمد شعیب پر کرپشن اور بدعنوانی کے الزامات لگتے رہیں ہیں تاہم "خفیہ ہاتھ"ہر بار اپنا کام دکھا جاتے تھے جس کی وجہ سے ڈاکٹر محمد شعیب پھر من پسند جگہ پر اپنی تعیناتی کروا لیتے رہے ہیں،دوسری طرف ڈاکٹر شعیب نے اپنے اوپر لگنے والے تمام الزامات کو من گھڑت قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا ہے۔

تفصیلات کےمطابق انجینئرنگ یونیورسٹی کےوائس چانسلر ڈاکٹر منصور سرور نے  آئی بی ایم ڈیپارٹمنٹ  کے ڈائریکٹرڈاکٹر محمد شعیب  کو بدعنوانی کی بنیاد پر عہدے سے ہٹاتے ہوئےکمپیوٹرسائنسز ڈیپارٹمنٹ میں رپورٹ کرنے کا حکم دیا ہے۔اس سے قبل 2013 ء میں اس وقت کے وائس چانسلر جنرل(ر)محمداکرم خاں نے ڈاکٹر شعیب کو پہلی بار آئی بی ایم ڈیپارٹمنٹ کا ڈائرکٹر مقرر کیا تھاتاہم پھر سابق وائس چانسلر ڈاکٹر فضل احمد خالد نے کرپشن کے الزامات کی بنیاد پر انہیں بر طرف کردیا تھا۔ ڈاکٹر شعیب کے خلاف مبینہ کرپشن کی بنیاد پر نیب اور اینٹی کرپشن میں بھی مقدمات چلتے رہے ہیں۔گذشتہ قائمقام وائس چانسلر ڈاکٹر عزیز اکبر نے انہیں دوبارہ مقرر کردیا۔ حالیہ عرصے میں ڈاکٹر شعیب کی پھر کرپشن یوں پکڑی گئی کہ یونیورسٹی کے قاعدے کےمطابق تمام اضافی ذمہ داری پرکام کرنے والے پروفیسر کو 5000 اضافی الاؤنس ملتا ہے لیکن ڈاکٹر شعیب اکاؤنٹس برانچ کو دھوکہ دے کر پانچ ہزار کی بجائے پچاس ہزار وصول کرتے رہے،اس چوری کاجب انکشاف موجودہ وائس چانسلرکوہوا تو انہوں نےنہ صرف ریکوری ڈالی بلکہ انہیں انکےعہدے سے بھی ہٹا دیا۔

رجسٹرار یوای ٹی محمد آصف کی طرف سے جاری کرد ہ لیٹر میں کہا گیا ہے کہ قواعد کے مطابق کسی ڈیپارٹمنٹ میں پروفیسر یاایسوسی ایٹ پروفیسر نہ ہو تو اس ڈسپلن کی فیکلٹی کے ڈین کو چارج دے دیا جاتا ہے۔ آئی بی یم میں پروفیسر اور ایسوسی ایٹ پروفیسر نہیں ہے،اس لیے ڈین فیکلٹی آف نیچرل سائنس ہیومن ٹیز اینڈ اسلامک سٹڈیز ڈاکٹر شاہد رفیق کوآئی بی ایم ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر کا اضافی چارج دے دیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق ڈاکٹر شعیب کی سابق کرپشن کے مقدمات ری اوپن ہونے کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔

اس حوالے سے جب ڈاکٹر محمد شعیب سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی قوائد کے مطابق میرا تبادلہ ایک روٹین کا معاملہ ہے ،اس میں ایسی کوئی بات نہیں ،یونیورسٹی کے بعض عناصر میرے پیچھے ہاتھ دھو کرپڑے ہوئے ہیں جو مجھ پر من گھڑت  الزامات عائد کرتے رہتے ہیں ۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -