سات بار آسمانی بجلی کی زد میں آنے والا دنیا کا انوکھا ترین آدمی

سات بار آسمانی بجلی کی زد میں آنے والا دنیا کا انوکھا ترین آدمی
سات بار آسمانی بجلی کی زد میں آنے والا دنیا کا انوکھا ترین آدمی

  


نیویارک (نیوز ڈیسک) آسمانی بجلی کا شمار خوفناک مظاہر فطرت میں ہوتا ہے اور یہ تصور ہی دہشت زدہ کر دیتا ہے کہ انسان اس کا شکار بن سکتا ہے مگر ایک امریکی شخص کا جسم تو گویا آسمانی بجلی کیلئے گرنے کی پسندیدہ ترین جگہ تھی۔ ریاست ورجینیا سے تعلق رکھنے والے رائے سی سلیوان ایک وسیع و عریض جنگلی پارک میں سرحدی محافظ کے فرائض سرانجام دیتے تھے۔

دو افغانیوں اور دو ایرانیوں کی کویت میں سر بازار خاتون کے ساتھ گری ہوئی حرکت ، تفصیلات کے لیے کلک کریں

وہ پہلی دفعہ 1942ءمیں آسمانی بجلی کا شکار بنے اور اس حادثے میں صرف ان کے پاﺅں کا انگوٹھا زخمی ہوا۔ اس کے بعد 1969ءمیں دوبارہ حملہ ہوا اور ان کی بھنویں اڑ گئیں۔ اگلے ہی سال 1970ءمیں پھر ان پر بجلی گری اور اس دفعہ بایاں کندھا جل گیا۔ اس کے بعد یہ واقعہ 1972ءمیں پیش آیا اور ان کے سر کے بال جل گئے۔ ابھی نئے بال پوری طرح آئے بھی نہ تھے کہ 1973ءمیں پھر بجلی گری اور پھر بال جل گئے، جبکہ ٹانگوں کے زخم اضافی تھے۔تین سال بعد 1976 میں جب آسمانی بجلی نے انہیں نشانہ بنایا تو ایک ٹخنہ جل گیا اور پھر 1977ءمیں جب حملہ ہوا تو سینے اور پیٹ پر جلنے کے شدید زخم آئے۔ اس کے بعد 6 سال تک وہ آسمانی بجلی سے تو محفوظ رہے لیکن 1983ءمیں خودکشی کر کے دنیا سے رخصت ہو گئے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...