دہشتگردی کیخلاف جنگ میں فتح بہادر قوم کے حصے آئیگی، حمزہ شہباز

دہشتگردی کیخلاف جنگ میں فتح بہادر قوم کے حصے آئیگی، حمزہ شہباز

 لاہور( جنرل رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ(ن)کے مرکزی رہنماو رکن قومی اسمبلی حمزہ شہبازشریف نے کہاہے کہ تمام دہشت گردبلا تقریق ہمارے ملک کے دشمن ہیں ۔معصوم بچوں اور بے گناہ شہریوں کاخون بہانے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں ۔پاکستانی قوم میں بڑا دم اورحوصلہ ہے ۔دہشت گردی کے خلاف جنگ میںآخری فتح ہماری بہادراور غیور قوم کے حصے میں آئے گی ۔ وزیراعظم محمدنوازشریف نے دہشت گردی کے خلاف جنگ کی خود قیادت کرنے کا جرات مندانہ فیصلہ کر کے قوم کو نیاولولہ اور ناقابل تسخیر عزم بخشاہے ۔ دہشت گردوں کے خلاف آپریشن آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جاری رہے گا۔حمزہ شہباز شریف نے ان خیالات کا اظہارما ڈل ٹاؤن پارٹی سیکرٹریٹ میں فیڈرل ایڈوائزری کونسل برائے سوشل ٹراما کی صوبائی سٹیئرنگ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا ۔اجلاس میں ایڈوائزری کونسل کی کوآرڈی نیٹر ایم این اے ماروی میمن کے علاوہ صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہود احمد خان ،زعیم حسین قادری اور صوبائی سیکرٹریز نے شرکت کی ۔حمزہ شہبازشریف نے کہا کہ ارض وطن کودہشت گردوں کے ناپاک وجود سے ہمیشہ کیلئے ناپاک کردیا جائے گا۔ہماری بہادر افواج دہشت گردوں کے قدم ملک میں جمنے نہیں دیں گے۔اجلاس کے شرکاء کو دہشت گردی سیلاب وزلزلہ اوردیگر قدرتی آفات سے متاثرہ افراد کی نفسیاتی بحالی کیلئے قائم کی گئی وفاقی ایڈوائزری کونسل کے تحت صوبائی سطح پر تشکیل دی جانے والی سائکو سوشل ٹراما سٹیئرنگ کمیٹی کے اغراض و مقاصد اور طریقہ کارکے بارے میں بریفنگ دی گئی ۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ پنجاب میں ایسی آفات کے متاثرین کی بحالی کیلئے صوبائی محکمہ داخلہ،صحت ،پی ڈی ایم اے اور ریسکیو 1122کے حکام پر مشتمل سٹیئرنگ کمیٹی لاہور میں کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج ، جنرل ہسپتال ،کنگارام ہسپتال سمیت صوبے کے تمام ہسپتالوں سے تعلق رکھنے والے نفسیاتی صحت کے ماہرین کی خدمات حاصل کرکے متاثرہ افراد کی بحالی کیلئے ورکشاپس اوراشتہاری مواد کے ماڈیول تیار کرے گی ۔اس مقصدکیلئے مختلف یونیورسٹیوں اور کالجوں سے تعلق رکھنے والے اساتذہ پر مشتمل ماسٹر ٹرینر بھی تیار کئے جائیں گے۔پنجاب حکومت اس بارے میں ایک ویب سائیٹ بھی لانچ کرے گی ۔اجلاس کو مزید بتایا گیاکہ انتہاپسند ی کے ذہنی رجحانات کے حامل نوجوانوں کو نفسیاتی تربیت کے ذریعے نارمل رویوں کی طرف واپس لانے کی کوشش بھی کی جائے گی ۔اس عمل میں این جی اوز کو بھی شامل کیا جائے گا۔

مزید : صفحہ اول


loading...