مکھیوں سے بچنے کے لئے بادشاہ اپنے غلاموں کو شہد میں نہلا دیتا

مکھیوں سے بچنے کے لئے بادشاہ اپنے غلاموں کو شہد میں نہلا دیتا
مکھیوں سے بچنے کے لئے بادشاہ اپنے غلاموں کو شہد میں نہلا دیتا

  


لاہور (نیوز ڈیسک) قدیم دور کے بادشاہوں کے متعلق طرح طرح کے قصے مشہور ہیں جن میں وہ کبھی خوش ہوکر ہیرے جواہرات لٹاتے نظر آتے ہیں تو کبھی کسی کی گردن زنی کا حکم صادر کرتے ہیں لیکن قدیم مصر کے فرعون پیپی دوئم کی سب سے مشہور بات یہ ہے کہ اس کے گرد ہمیشہ برہنہ غلام کھڑے رہتے تھے جن کے جسم شہد میں ڈھکے ہوتے تھے۔ تاریخ دان کہتے ہیں کہ پیپی دوئم کو مکھیوں سے شدید نفرت تھی۔ اس لئے اس کے دربار میں مختلف جگہوں پر اور خصوصاً اس کے قریب شہید میں لتھڑے ہوئے غلام کھڑے کئے جاتے تھے تاکہ کبھی کوئی مکھی بھولے سے بھی فرعون پیپی کی طرف نہ جائے اور اس کے تخت تک پہنچنے سے پہلے ہی شہد کی طرف مائل ہوکر کسی نہ کسی غلام کے جسم سے چمٹ جائے۔تاریخ دانوں کا کہنا ہے کہ غالباً یہ حکمت عملی کامیاب تھی کیونکہ اس شہنشاہ کے عہد حکومت میں اس طریقہ کار کا استعمال کئی سالوں پر محیط نظر آتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...