بنگلہ دیش نے جنگی جرائم کے الزام میں جماعت اسلامی کے رہنماءاظہر الاسلام کو سزائے موت سنا دی

بنگلہ دیش نے جنگی جرائم کے الزام میں جماعت اسلامی کے رہنماءاظہر الاسلام کو ...
بنگلہ دیش نے جنگی جرائم کے الزام میں جماعت اسلامی کے رہنماءاظہر الاسلام کو سزائے موت سنا دی

  


ڈھاکہ(مانیٹرنگ ڈیسک) بنگلہ دیش میں جنگی جرائم کے لئے قائم ٹربیونل نے جماعت اسلامی کے نائب سیکریٹری جنرل اظہر الاسلام کو 1971میں ہونے والی پاک بھارت جنگ کے دوران جنگی جرائم کا مرتکب ہونے پر سزائے موت سنا دی ہے۔ ان پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ جنگ کے دوران پاکستان کی طرف جھکاو رکھنے والے ملیشیا گروپ کے ایک رکن کے طور پر وسیع پیمانے پر قتلِ عام میں حصہ لیا تھا۔تفصیلات کے مطابق جماعت اسلامی کے رہماءایسے چھٹے شخص ہیں جنھیں جنگی جرائم کے مرتکب مشتبہ ملزمان کو سزا دینے کے لیے چار سال پہلے بننے والے ٹربیونل نے سزا سنائی ہے۔

سزا کے بعد جماعت اسلامی سمیت تمام مذہبی جماعتوں کا کہنا ہے کہ یہ ٹربیونل انھیں سزا دینے کے لیے ہی بنایا گیا ہے اور یہ تمام مقدمات سیاسی بنیادوں پر قائم کیے گئے ہیں جبکہ انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیموں کے مطابق بھی یہ ٹربیونل بین الاقوامی معیار پر پورا نہیں اترتا۔

ان عدالتی کارروائیوں کے ناقدین کا بھی یہی کہنا ہے کہ حکومت جنگی جرائم کے ٹربیونل کو اپنے سیاسی مخالفین کو نشانہ بنانے کے لیے استعمال کر رہی ہے کیونکہ 1971 میں مارے جانے والے افراد کی تعداد سے متعلق حکومتی اعداوشمار حقائق کے مطابق دکھائی نہیں دیتے اور حال ہی میں بنگلہ دیش کی ایک عدالت نے انعام یافتہ برطانوی صحافی ڈیوڈ برگمین کو اس جنگ میں مرنے والوں کے سرکاری اعداد و شمار پر سوال اٹھانے پر توہینِ عدالت کا مجرم قرار دیا تھا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...