کوہاٹ میں جوئے کی محفل الٹ دی گئیں ،رقم ،آلات قمار بازی برآمد

کوہاٹ میں جوئے کی محفل الٹ دی گئیں ،رقم ،آلات قمار بازی برآمد

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) کوہاٹ میں مختلف مقامات پر مرغوں اور تیتروں کی لڑائی پر جوئے کی محفلیں الٹ دی گئیں جبکہ جوا کھیلنے والے 33قمار بازوں کو لاکھوں کی داؤ منی سمیت گرفتار کر لیا گیا ہے۔پولیس نے بڑی تعداد میں اعلیٰ نسل کے مرغ اور تیتر قبضے میں لیکر مقدمات درج کر لئے ہیں۔پولیس ذرائع کے مطابق ایس ایچ او تھانہ محمد ریاض شہید انسپکٹر سادات خان نے مخبر کی اطلاع پر کامیاب کاروائی کرتے ہوئے پولیس نفری کے ہمراہ کوہاٹ پنڈی روڈ پر واقع سید ذبیر شاہ نامی مقامی باشندے کے حجرے پر اچانک چھاپہ مارا جہاں مرغوں کی لڑائی پر جوئے کے کھیل میں مصروف 26قمار بازوں اسماعیل،راج ولی،اختر،شہزاد میر،نسیم،عادل فیاض،شہزاد،اجمل،اشتیاق،کامران،فیاض،عادل،آصف،ماجد،عمران،ضیاء الدین،افتراز علی،آصف اللہ،انور حسین،آصف اقبال،اسماعیل شاہ،احتشام احمد،عبدالولی،عمران،رسول خان اور قمار خانہ کے مالک سید ذبیر شاہ کو حراست میں لیکر انکے قبضے سے داؤ پر لگی 53ہزار روپے کی نقدی اور تین مرغ تحویل میں لے لئے۔پولیس نے گرفتار ملزمان کو تھانہ محمد ریاض شہید منتقل کرکے انکے خلاف قمار بازی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرلیا۔دریں اثناء قمار بازی کی حوصلہ شکنی کی ایک اور کاروائی تھانہ جنگل خیل کی حدود میں عمل میں لائی گئی جہاں ایس ایچ او تھانہ جنگل خیل انسپکٹر غلام مرتضیٰ نے بھاری پولیس نفری کے ہمراہ ملنگ آباد کے علاقے میں کامیاب چھاپہ مار کاروائی کے دوران تیتروں کی لڑائی پر جاری قمار بازی کے مقام کواچانک گھیرے میں لے لیا اور جوئے کے کھیل پر لگی مجموعی طور پر 51060کی نقدرقم ،چھ عد د موبائل فون سیٹس اور تین جوڑے اعلیٰ نسل کے تیتر قبضے میں لیکر لکی مروت اور کوہاٹ کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے سات قمار بازوں گل رحمان،حکیم اللہ،میر بادشاہ،گل احمد،عصمت اللہ،فیصل اور سعید کوموقع پر گرفتار کرکے تھانہ جنگل خیل منتقل کر دیا جہاں انکے خلاف لوکل اینڈ سپیشل لاء کے قمار بازی اور بے رحمی جانوران ایکٹ کے تحت مقدمہ قائم کر دیا گیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...