احتساب پر تحفظات دور نہ ہوئے تو یہ انتقام تصور ہوگا، چودھری نثار

احتساب پر تحفظات دور نہ ہوئے تو یہ انتقام تصور ہوگا، چودھری نثار

  

راولپنڈی (سٹاف رپورٹر ) سینئر سیاستدان وسابق وزیر داخلہ چودھری نثار نے کہا ہے کہ ملک میں اس وقت شدیدسیاسی بحران ہے، حکومت کی ذمہ داری ہے کہ ملک کوعدم استحکام سے نکالے،،ملک اپوزیشن کے بغیرنہیں چل سکتا لہٰذاحکومت اپوزیشن کے تحفظات دورکرے اور اگر تحفظات دورنہ کیے گئے تویہ احتساب انتقام تصور ہوگا اوریک طرفہ احتساب ملک کیلئے زہر قاتل ثابت ہو گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس میں کیا۔چودھری نثار نے کہا کہ میرامشورہ ماناجاتاتو آج مسلم لیگ ن کی حکومت ہوتی۔انہوں نے کہا کہ کرتارپورراہداری کھولناحکومت کااقدام نہیں آرمی چیف کاتھا دوسری جانب مودی حکومت پاکستان سے اچھے تعلقات نہیں چاہتی لہٰذا ایسے ماحول میں باربارمذاکرات کی باتیں کرناپاکستان کے مفادمیں نہیں اس لئے مذاکرات کیلئے مودی کی منتیں کرناغیرت کے منافی ہے۔ چودھری نثار نے کہا کہ ہماری ترقی، مستقبل، استحکام پاکستان کے سیاسی استحکام پر مبنی ہے، حکومت کو سمجھنا چاہیے کہ کوئی بھی ملک پالیسی کے سفر کے آگے نہیں بڑھ سکتا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو اپوزیشن سے مل کر احتساب کے طریقہ کار پر تحفظات ہیں وہ دور کرنے چاہیں اور اداروں کوپورا موقع ملنا چاہئے کہ وہ احتساب کو منطقی انجام تک پہنچاسکے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن میں ہوں نہ حکومت میں لیکن میں سمجھتا ہوں کہ دونوں طرف موجود موثر لوگ اچھا کردار ادا کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمیں سعودی عرب، یو اے ای اور سپین سے وقتی امداد ملی اورمجھے تو شدید اندیشہ ہے کہ پہلے ہم غیروں کے قرضوں میں جکڑے ہوئے تھے اب ہم دوستوں کے قرضوں میں کہیں نہ جکڑ دیئے جائیں۔

چودھری نثار

مزید :

صفحہ اول -