سندھ میں ان ہاﺅس تبدیلی ہونا غیر قانونی نہیں ، پارٹی قیادت کے احکامات پر عمل کروں گا :عمران اسماعیل

سندھ میں ان ہاﺅس تبدیلی ہونا غیر قانونی نہیں ، پارٹی قیادت کے احکامات پر عمل ...
سندھ میں ان ہاﺅس تبدیلی ہونا غیر قانونی نہیں ، پارٹی قیادت کے احکامات پر عمل کروں گا :عمران اسماعیل

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہاہے کہ سندھ میں اگر کوئی ان ہاﺅس تبدیلی ہوتی ہے تویہ غیر قانونی نہیں ہوگی ، پارٹی قیادت کے احکامات پر عمل کروں گا ۔

جیونیوز کے پروگرام ”نیا پاکستان “ میں گفتگو کرتے ہوئے عمران اسماعیل نے کہا کہ سندھ کے حوالے سے جو تحریک انصاف کی قیادت کی طرف سے احکامات آئیں گے ، ان کے مطابق چلوں گا ، میں صوبے اور وفاق میں پل کا کردار ادا کرنا چاہتا تھالیکن سندھ حکومت کے رویے کی وجہ سے میری وزیر اعلیٰ سے دوری بڑھتی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں اس وقت ایک دیانتدار حکومت قائم ہے ، غلطیاں ہوسکتی ہیں لیکن کرپشن نہیں ہوسکتی ، کرپشن کرنیوالے جیل کی ہوا کھائیں گے اور لوٹا ہوا پیسہ واپس کریں گے ۔

انہوں نے کہا کہ اگر پیپلزپارٹی کے کچھ ارکان ہمارے ساتھ رابطے میں ہیں تو اس میں کیا قباحت ہے ، اگر سندھ میں کوئی ان ہاﺅس تبدیلی ہوتی ہے تو یہ غیرقانونی نہیں ہے ، البتہ تحریک انصاف کی طرف سے ہارس ٹریڈنگ نہیں ہوگی، فارورڈ بلاک اگر پیپلز پارٹی میں بنتا ہے تو یہ پیپلزپارٹی کا مسئلہ ہے ، وہ اپنے لوگوں کو سنبھالیں ، جے آئی ٹی کی رپورٹ کے بعداگر مراد علی شاہ اخلاقی طور پر مستعفی ہونا چاہتے ہیں ہوجائیں اور اگر نہیں دینا چاہتے تو بھی ان کی مرضی ہے ، وہ قانونی جنگ لڑیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اب سندھ میں مزید کرپشن نہیں ہونے دیں گے ،اس وقت کوئی غیر یقینی صورتحال نہیں پیداہورہی ، جے آئی ٹی کی رپورٹ پر طبل جنگ بجایاجارہاہے ، اگر طبل جنگ بجے گا تو پھر پورا بجے گا ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -