اشرافیہ نے وسائل کھائے، ملک آئی ایم ایف کے پاس گروی رکھا، رضا ربانی

      اشرافیہ نے وسائل کھائے، ملک آئی ایم ایف کے پاس گروی رکھا، رضا ربانی

  



کراچی(آئی این پی)پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما سینیٹر میاں رضا ربانی نے اعتراف کیا ہے کہ اشرافیہ نے وسائل کھائے اور ملک کو آئی ایم ایف کے پاس گروی رکھا۔ انہوں نے کہا کہ ملک سے ٹریڈ یونینز اورکافی ہاؤس کلچر کا خاتمہ کیا گیا۔ کہیں ریاستی جبر کیا گیا تو کہیں کرپشن کے ذریعے لوگوں کو خریدا گیا۔اتوار کو کراچی رٹس کونسل میں  ڈاکٹر ریاض شیخ کی تحریر کردہ کتاب کی تقریب رونمائی سے خطاب کرتے ہوئے  رضا ربانی نے کہا کہ  بدقسمتی سے ملک میں تاریخ کو قلمبند نہیں کیا گیا اور جب بھی تاریخ لکھی گئی تو وہ ریاست کے حکم کے تحت لکھی گئی۔سابق چیئرمین سینیٹ سینیٹر میاں رضا ربانی استفسار کیا کہ آخر کیوں نصاب سے بھگت سنگ کا نام اور باب نکال دیا جاتا ہے؟ انہوں نے کہا کہ آج کی نصابی کتب میں جمہوریت کا باب ہی نہیں ہے۔ رضا ربانی نے کہا کہ ریاست کا موجودہ ذہن آج نہیں بنا بلکہ قائداعظم کی وفات کے بعد ہی بن گیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ باقاعدہ ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت صوبائی خودمختاری کو ختم کیا گیا اور جمہوریت کو توڑنے و مروڑنے کی کشمکش چلتی رہی۔ ان کا کہنا تھا کہ ایوب خان حکومت کے خاتمے میں طلبہ یونینز، ٹریڈ یونینز اور مزاحمتی سیاست کا اہم کردار تھا۔

رضا ربانی

مزید : علاقائی